تیل چوری سکینڈل، مافیا کا پورے ملک میں نیٹ ورک، پولیس کاایکشن سے انکار

  تیل چوری سکینڈل، مافیا کا پورے ملک میں نیٹ ورک، پولیس کاایکشن سے انکار

  



چوک مکول(نامہ نگار) پاک عرب آئل ریفائنری تیل چوری سکینڈل میں اہم انکشافات ہوئے ہیں، مظفرگڑھ میں کلمپ لگاکر کروڑوں روپے مالیت کا تیل چوری کرنیوالے آئل مافیا کے خلاف پہلے بھی کئی مقدمات درج ہیں۔ شبو ہمبڑ ایرانی تیل اسملنگ میں بھی ملوث، غلام عباس پہلے بھی(بقیہ نمبر12صفحہ12پر)

ڈیل کے تحت مقدمہ میں بیگناہ ہونے کے بعد دوبارہ تفتیش میں گناہ گار ثابت ہونے پر گرفتار رہ چکا، مظفرگڑھ کے مختلف علاقوں میں پکڑے جانیوالے آئل ریفائنری کی پائپ لائن سے کلمپ لگاکر تیل چوری کی بڑی وارداتیں پولیس کے بروقت نہ پکڑنے کا انکشاف ہوا ہے پولیس نے آئل ریفائنری سکینڈل میں مزید پیشرفت کرنے کے لیے کسی بھی بڑے مگر مچھ پر ہاتھ جان بوجھ کر نہیں ڈالا۔ تفصیل کے مطابق ضلع مظفرگڑھ کے مختلف علاقوں میں مختصر عرصے کے دوران پاک عرب آئل ریفائنری کی پائپ لائن سے کروڑوں روپے کی تیل چوری کی بڑی وارداتوں میں اضافہ ہوا ہے جبکہ تھانہ چوک قریشی، تھانہ صدر، تھانہ محمود کوٹ سمیت دیگر علاقوں میں پکڑے جانیوالے کسی بھی آئل مافیا کے کلمپ کو پولیس کی طرف سے بروقت نہیں پکڑا گیا جبکہ آئل مافیا، پولیس اور پارکو ملازمین کے درمیان گٹھ جوڑ کے باعث اس وقت مظفرگڑھ تیل چوری کا مرکز بن چکا ہے کیونکہ اب تک آئل مافیا کے کسی بھی بڑے سرغنہ پر کوئی بھی ہاتھ نہیں ڈالا گیا ہے۔ اور ذرائع نے یہ بھی انکشاف کیا ہے کہ آئل مافیا کے سرغنہ غلام عباس کے خلاف تھانہ محمود کوٹ میں تیل چوری کا مقدمہ درج کیا گیا تو ڈیل کرتے ہوئے بیگناہ لکھ دیا گیا جس پر اس مقدمہ میں دوبارہ تحقیقات کی تو آئل مافیا کا سرغنہ غلام عباس گناہ گار نکلا اور اس وقت کے ڈی پی او اویس ملک نے انکو اپنے دفتر سے ہتھکڑیاں لگوا کر ایس ایچ او محمود کوٹ چوہدری جاوید اختر کے حوالے کیا۔ غلام شبیر المعروف شبو ہمبڑ کے بارے میں انکشاف ہوا ہے کہ وہ اس وقت پورے ملک میں نیٹ ورک چلا رہا ہے جس کے پاس 3سو سے زائد آئل ٹینکرز کا نیٹ ورک موجود ہے اور وہ ایرانی تیل کی اسمگلنگ اور وائٹ سپرٹ کے نام پر تیل کی مکسنگ میں بھی ملوث ہے۔ تھانہ صدر مظفرگڑھ میں غلام شبیر المعروف شبو ہمبڑ اور غلام عباس کے خلاف پارکو آئل ریفائنری سے تیل چوری کا حالیہ دنوں میں مقدمہ درج کیا گیا ہے لیکن دونوں آئل مافیا کے سرغنہ قانون کی گرفت سے باہر ہیں کیونکہ ملتان سے تعلق رکھنے والے ان آئل مافیا کے اہم کرداروں کا پولیس کے اعلی افسران سمیت ملازمین میں گہرے مراسم قائم ہیں جو ان کے لیے وفاداریوں اور ہمدردیوں کا کردار ادا کرتے ہیں۔ پولیس ترجمان کے مطابق پارکو پائپ لائن سے کلمپ لگاکر تیل چوری کے مقدمات درج کرکے تین افراد کو گرفتار کیا گیا ہے جن کے قبضہ سے چوری شدہ تیل، کلمپ کا سامان اور آئل ٹینکر بھی برآمد کیے گئے ہیں مزید تحقیقات میں جو بھی ملوث ہوگا اس کے خلاف کاروائی عمل میں لائی جائیگی۔

مزید : ملتان صفحہ آخر