کرتارپور راہداری کھلنے پر بھارتی جاسوس سربجیت سنگھ کی بہن بھی چپ نہ رہ سکیں

کرتارپور راہداری کھلنے پر بھارتی جاسوس سربجیت سنگھ کی بہن بھی چپ نہ رہ سکیں
کرتارپور راہداری کھلنے پر بھارتی جاسوس سربجیت سنگھ کی بہن بھی چپ نہ رہ سکیں

  



لاہور(ویب ڈیسک)2013میں کوٹ لکھپت جیل لاہور میں ساتھی قیدیوں کے ساتھ لڑائی میں مارے جانے والے بھارتی جاسوس سربجیت سنگھ کی بہن دلبیر کور نے کہا ہے کہ کرتار پور راہداری نے پاکستان اور بھارت کو قریب کر دیا ہے۔ سربجیت سنگھ کی بیٹیوں سواپن دیپ اور پونم کے ہمراہ کرتار پور پہنچنے کے بعد جنگ سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کرتار پور آکر انہیں خوشی بھی ہو رہی ہے لیکن بھائی سے بچھڑنے کے دکھ آج پھر سے تازہ ہو گئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ انہوں نے قسم کھائی تھی کہ وہ دوبارہ پاکستان نہیں جائیں گی لیکن کرتار پور وہ اس لئے آئی ہیں کہ راہداری بھارت سے سیدھی گوردارہ جاتی ہے۔انہوں نے کہا کہ وہ ننکانہ صاحب کبھی نہیں جائیں گی جب کہ کرتار پور دوبارہ آنے کی خواہش مند ہیں۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ وہ پاکستان اور بھارت کی جیلوں میںایک دوسرے ملکوں کے قید افراد کی رہائی کے لئے جلد مہم شروع کریں گی۔

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور