ملتان:چینی انجینئرہلاک،پوسٹ مارٹم التواء کا شکار

ملتان:چینی انجینئرہلاک،پوسٹ مارٹم التواء کا شکار

  

ملتان(وقائع نگار )مظفر آباد کے علاقے انڈسٹریل اسٹیٹ ایریا میں واقع فیکٹری میں گیس لیکج کے باعث چائینز انجینئر جاں بحق اور 13افراد کا بے ہوش ہونے کا معاملہ۔چار روز گزرنے کے باوجود جاں بحق چائینز انجینئر کی لاش کا پوسٹ مارٹم نا بھائی کے انکار کی وجہ سے نا ہوسکا ہے۔ائی سی یو میں زیر علاج دوسرا چائینز کے ہوش میں آنے کا انتظار پوسٹ کروانے یا نا(بقیہ نمبر60صفحہ7پر)

 کروانے کا فیصلہ کیا جائے گا۔ مظفر آباد کے علاقے اسٹیٹ ایریا میں پانچ روز قبل نعمان خان کی سکہ ری سائیکلنگ کی فیکٹری میں خاشی روم میں گیس لیکج ہونے کی وجہ سے دوران کام چائینز انجینئر سمیت مقامی افراد بے ہوگئے۔ان میں صفدر فیاض۔ نعمان عثمان،حامد،قمر سلطان،مہتاب،سلطان،مزمل،تنویر اورقاسم کے نام شامل ہیں۔ فوری طور پر انکو نشتر ہسپتال لایا گیا۔جن میں سے طبی امداد دینے کے بعد صحت یاب ہونے پر مقامی گیارہ افراد کو ڈسچارج کردیا گیا۔جبکہ ایک چائینز زونگ ولد کنزہو آئی سی یو میں بدستور زیر علاج ہے۔اور وہ تاحال بے ہوشی کی حالت میں ہے۔ذرائع کے مطابق جاں بحق ہونے والے زونگ ولد شینگ کی لاش نشتر ہسپتال کے سرد خانے میں رکھوا دی گئی تھی۔لیکن جاں بحق چائنیز کے بھائی جو چائینہ میں رہائشی پذیر ہے۔اس نے بذریعہ فون پولیس اور نشتر ہسپتال کے ڈاکٹروں کو کہا کہ جب تک آئی سی یو میں زہر علاج دوسرا چائینز کو ہوش نہیں آ جاتا تب تک پوسٹ مارٹم نہیں کروانگے۔کیونکہ بے ہوش چائینز کے بیان کے بعد یہ فیصلہ کیا جائے گا۔کہ اگر موت حادثاتی ہے تو پھر کارروائی کی ضرورت نہیں ہے۔اور اگر مارا گیا ہے تو پھر کارروائی ہوگی۔ضلعی پولیس کی طرف سے نجی فیکٹری میں زہریلی گیس پھیلنے کے دوران چائنیز انجینئر اور ورکرز کی جان بچانے پر پولیس جوانوں کی بھرپور حوصلہ افزائی کی گئی اور ان میں نقد انعام اور تعریفی سرٹیفکیٹ تقسیم کئے گئے۔تفصیلات کے مطابق سی پی او ملتان  نے کہا ہے کہ پولیس فورس میں ایسے افسران اور جوانوں کی کوئی کمی نہیں جنہوں نے شہریوں کے جان و مال کی حفاظت اور محکمہ کے وقارو سر بلندی کیلئے ان تھک محنت کی ہے۔ یہی افسران اور جوان محکمہ کا فخر ہیں، ایسے جوان انعام اور ستائش کے مستحق ہیں۔سی پی او ملتان  نے ان جوانوں کی دلیرانہ کاوش پر ان کو شاباش دی اور تعریفی سرٹیفکیٹ اور نقد انعامات تقسیم کئے۔ان جوانوں میں کانسٹیبل محمد سجاد اور دانیال شامل ہیں جو اس وقت فارنر سیکیورٹی ڈیوٹی پر موجود تھے واضع رہے کہ  چند روز قبل نجی فیکٹری میں زہریلی گیس پھیلنے سے متعدد ورکرز بے ہوش گئے تھے جن کو ان جوانوں نے بغیر کسی سیفٹی آلات کے اور اپنی جان کی پرواہ کیے بغیر کمرے سے نکالتے رہے اور ہسپتال منتقل کروایا اس کے علاوہ سی پی او ملتان نے ڈولفن فورس کے جوانوں میں بھی نمایاں کارکردگی پر نقد انعامات اور تعریفی سرٹیفکیٹس دیے ان جوانوں میں محمد عبید، ناصرحسین، محمد انیس اور محمد عمیر شامل ہیں۔

حادثہ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -