کنز المدارس بورڈ پاکستان……تعلیم و تربیت کا انقلابی اقدام

کنز المدارس بورڈ پاکستان……تعلیم و تربیت کا انقلابی اقدام

  

عالمی دینی تحریک دعوت اسلامی کے تحت ملک و بیرون ملک،طلبہ و طالبات کو زیورِ علم سے آراستہ کرنے کے لیے الگ الگ ادارے قائم ہیں،جن میں حفظ وناظرہ،تجوید و قراء ت،مختلف کورسز،درس نظامی اور مختلف تخصصات کی تعلیم دی جاتی ہے۔برسوں سے اس کا امتحان ایک باقاعدہ نظم کے ساتھ لیا جاتا ہے۔وفاقی وزارتِ تعلیم و فنی تربیت حکومت ِ پاکستان نے دعوتِ اسلامی کووفاقی تعلیمی بورڈ بنام کنزالمدارس بورڈ کی منظوری دی ہے۔جس کے تحت ا متحان دے کر طلبہ وطالباتHECکی پالیسی کے مطابق ایم اے عربی اور اسلامیات کے مساوی ڈگری حاصل کر سکتے اور مزید تعلیم کا سلسلہ بھی جاری رکھ سکتے ہیں۔کنز المدارس بورڈ دعوت اسلامی کا ایک ذیلی ادارہ ہے۔اور دعوتِ اسلامی کے کام کے انداز کو دیکھا جائے تو یہ عصرِ حاضر کے تقاضوں کے مطابق منظم انداز میں کام کرنے کا ادارہ ہے۔جس نے الیکٹرانک میڈیا اور سوشل میڈیا کا بہت اچھا استعمال کیا ہے۔کنز المدارس بورڈ پاکستان مدارس کے بورڈ میں اپنی الگ شناخت اہمیت اور حیثیت رکھتا ہے۔سینکڑوں مدارس کانیٹ ورک اور لاکھوں طلبہ وطالبات کی تعداد پر مشتمل یہ ادارہ منفرد خصوصیات کا حامل ہے۔اس بورڈ کے مقاصد اور خصوصیات پر نگاہ دوڑائی جائے تو یہ آنے والے ایک روشن مستقبل کی نوید دلاتا ہے۔ویسے تو اس کے مقاصد میں سے ہر ایک اپنی جگہ اہم ہے لیکن ان میں بطورِ خاص درج ذہل نکات قابلِ توجہ ہیں۔

1۔انسانیت کی بقا اور فلاح وکامرانی کے لیے از حد ضروری قرآن وسنت کی تعلیم کا فروغ

2۔مدارس میں خالص علمی وتحقیقی ماحول کو پروان چڑھانا۔

3۔R&Dشعبے کا قیام۔جس کے تحت ریسرچ اور ڈویلپمنٹ کو فروغ دیا جائے گا۔

کنز المدارس بورڈ کی چند خصوصیات

کوڈ بک کا اجراCode Book Issuance of کنز المدارس بورڈ کے تعارف،نصابِ تعلیم اور نظامِ امتحانات پر مشتمل کوڈ بک Code Book کا اجراء ایک اہم کاوش ہے۔جس میں جدید طریقہ ہائے تدریس کے تقاضوں کے پیشِ نظر نصاب کی Scheme of Studiesکو بیان کیا گیا ہے اور ہر سبق کے لیے مختص گھنٹے Credit Hours بھی درج کیے گئے ہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ امتحانی نظام اور اس کے قواعد وضوابط تحریری صورت میں پیش کردئیے گئے ہیں تاکہ طلبہ و طالبات اور ان کے سرپرست صاحبان ان سے آگاہی حاصل کر سکیں۔کتاب میں مذکور امتحانی نظم کے مختلف مراحل قابلِ مطالعہ ہیں۔ان سے انداز ہوتا ہے کہ بورڈ کے وابستگان نے کس محنت کے ساتھ جملہ امور سر انجام دئیے ہیں۔

پیپر پیٹرن کا نفاذ

عمومی طور پر مدارسِ دینیہ،بلکہ کئی رسمی تعلیم کے اداروں میں پرچہ جات لینے کا روایتی طریقہ کار رائج ہے۔جس میں زیادہ زور اس بات پرہوتا ہے کہ کون زیادہ رٹا لگا کر سبق کو یاد کرتا ہے۔ اس عمل سے طلبہ کی قوتِ حافظہ تو مضبوط ہوتی ہے،لیکن بات کو سمجھنے کی صلاحیت بعض اوقات دب جاتی ہے۔جس کا نتیجہ یہ ہوتا ہے کہ رٹے کی بنا پر بعض طلبہ نمایاں نمبرز حاصل کر لیتے ہیں لیکن متعلقہ مضمون میں ان کی سمجھ بوجھ کم ہوتی ہے۔ جبکہ اس سبجیکٹ کی سمجھ بوجھ رکھنے والے طلبہ و طالبات پیچھے رہ جاتے ہیں۔ کنز المدارس بورڈ اس اعتبار سے بھی سبقت لے گیا ہے کہ اس نے اپنے پہلے ہی سال میں طلبہ کی صلاحیتوں کی جانچ کے لیے رائج Modern Assessment  System  کا آغاز کر دیا ہے۔ امتحانی سوالات کو تین حصوں میں تقسیم کیا گیا ہے۔(1)کثیر الانتخابی سوالات MCQ’s،(2)مختصر سوالات SQ’s (3)اور طویل سوالات LQ’s۔اس پیٹرن سے طلبہ وطالبات فقط رٹے لگانے سے نکل کر متعلقہ مضمون کو سمجھیں گے۔جو ان کیلئے بہت مفید ثابت ہو گا۔

نصاب میں سوشل سائنسز کا شمول

 طلبہ کو معاشر ے کا پر امن،مہذاب اور باوقار فرد بنانے کیلئے جہاں قرآن وسنت کا علم بہت اہم ہے وہیں حالاتِ زمانہ کی معرفت اور ملک کے رائج قوانین سے آگاہی بہت اہمیت کی حامل ہے۔ان کی رعایت نہ کرنے سے معاشرے کا ایک طبقہ ان سے دور رہنے کی کوشش کرتا ہے۔ یا یہ طلبہ ان سے دور دور دکھائی دیتے ہیں۔نصاب کو معاشرے سے مزید ہم آہنگ کرنے اور طلبہ کو عملی طور پر مزید بہتر بنانے کیلئے کنز المدارس بورڈ نے جاری کردہ نصاب میں سوشل سائنسز کو بطورِ خاص جگہ د ی ہے۔

 جامع نصاب 

کنز المدارس کے نصاب کی اہم خصوصیت یہ ہے کہ یہ قدیم و جدید علوم کا حسین امتزاج ہے۔جس میں طلبہ کی نفسیات او راخلاقی تربیت پر خصوصی توجہ دی گئی ہے۔اگر باطن کی اصلاح کیلئے تصوف جیسا اہم علم نصاب کا حصہ ہے تو اس کے ساتھ ساتھ انگلش لینگوئج،جدید اصول تحقیق اور کمپیوٹر کی تعلیم کوبھی جگہ دی گئی ہے۔ دعوت الی اللہ کے تقاضوں،داعی،مدعو کے آداب بھی شامل نصاب ہیں۔فقہ،حدیث،عربی لغت،اقتصادیات اور مختلف فنون میں تخصص Specialization سے نصاب کی جامعیت میں اور اضافہ ہوگیا ہے۔

٭٭٭

طلبہ وطالبات ایچ ای سی کی پالیسی کے مطابق ایم اے عربی اور اسلامیات کے مساوی ڈگری حاصل کر سکتے  

مزید :

ایڈیشن 1 -