مریم نوا ز کی درخواست بریت ناقابل سماعت، مسترد کی جائے، نیب کا عدالت میں جواب

  مریم نوا ز کی درخواست بریت ناقابل سماعت، مسترد کی جائے، نیب کا عدالت میں ...

  

      اسلام آباد (سٹاف رپورٹر) قومی احتساب بیورو (نیب) نے اسلام آباد ہائیکورٹ میں ایون فیلڈ ریفرنس میں مریم نواز کی بریت کی درخواست پر جواب جمع کرادیا جس میں کہا گیا ہے کہ مریم نواز کی بریت کی درخواست ناقابل سماعت‘درخواست میں بیان کردہ حقائق درست نہیں‘درخواست میں لگائے الزامات پر سپریم کورٹ پہلے ہی فیصلہ دے چکی ہے‘ احتساب عدالت نے ایون فیلڈ ریفرنس میں قانونی تقاضوں کو پورا کرکے سزا سنائی‘  ٹرائل کورٹ میں صاف شفاف ٹرائل ہوا‘ مریم کے والد نوازشریف‘ بھائی عدالتی مفرور‘ ملزمان نے لندن فلیٹس کی منی ٹریل نہیں دی‘ نوازشریف بتائیں لندن جائیدایں کیسی خریدیں، پیسہ کیسے منتقل کیا؟‘مریم نواز کے نگران جج پرالزامات توہینِ عدالت کے زمرے میں آتے ہیں۔تفصیلات کے مطابق نیب نے احتساب عدالت کے فیصلے کے خلاف مریم نواز کی اپیل خارج کرنے اور مثالی جرمانے لگانے کی استدعا کردی۔نیب نے اسلام آباد ہائیکورٹ میں اپنے جواب میں لکھا ہے کہ مریم نواز کی بریت کی درخواست ناقابل سماعت ہیں۔ مریم نواز کی بریت کی درخواست میں بیان کیے گئے حقائق درست نہیں۔جواب میں لکھا گیا کہ بریت کی درخواست میں لگائے گئے الزامات پر سپریم کورٹ پہلے ہی فیصلہ دے چکی ہے۔ احتساب عدالت نے ایون فیلڈ ریفرنس میں تمام قانونی تقاضوں کو پورا کرکے سزا سنائی۔نیب نے جواب میں کہا ہے کہ ٹرائل کورٹ میں ایون فیلڈ ریفرنس کا صاف شفاف ٹرائل ہوا۔ مریم نواز کے والد نوازشریف، بھائی حسن اور حسین نوازعدالتی مفرور ہیں۔ ملزمان نے لندن فلیٹس کی منی ٹریل نہیں دی۔نیب کا جواب میں کہنا ہے کہ نوازشریف بتائیں لندن جائیدایں کیسی خریدیں، پیسہ کیسے منتقل کیا؟ سپریم کورٹ نے فیصلے پر عملدرامد کیلئے نگران جج مقررکیا۔ مریم نواز کی درخواست عدالت کے ساتھ دھوکا دہی کے مترادف ہے۔نیب نے جواب میں لکھا کہ مریم نواز کے نگران جج پرالزامات توہینِ عدالت کے زمرے میں آتے ہیں، پانامہ کیس کی سماعت کرنے والے جج ابھی بھی جوڈیشل سروس میں ہیں۔

نیب جواب

مزید :

صفحہ اول -