سکھر، منشیات فروشی سے منع کرنے پر مسلح افراد کا نوجوان پر حملہ  

سکھر، منشیات فروشی سے منع کرنے پر مسلح افراد کا نوجوان پر حملہ  

  

سکھر(ڈسٹرکٹ رپورٹر) منشیات فروشی سے منع کرنے پر مسلح افراد کا نوجوان پر حملہ، تشدد کا نشانہ بنا نے کے بعد فرار، مقدمہ درج ہونے کے باوجود پولیس ملوث افراد کو گرفتار کرنے میں ناکام، ورثاء کا بالا حکام سے نوٹس لیکر تحفظ فراہمی سمیت ملوث افراد کے خلاف کاروائی کامطالبہ، تفصیلات کے مطابق سکھر کے علاقے نیو گوٹھ اقصیٰ مسجد کے قریب منشیات فروشی سے منع کرنے پر نامعلوم مسلح افراد نے گذشتہ روز نوجوان حفیظ اللہ بندھانی پر حملہ کر کے اسے تشدد کا نشانہ بنایا اور فرار ہو گئے، زخمی کو سکھر کے سول اسپتال میں داخل کر ادیا گیا جہاں ڈاکٹروں نے اسے طبی امداد فراہم کی، زخمی کے والد عبدالکرام بندھانی کے مطابق میرے بیٹے نے گھر کے سامنے منشیات فروخت کرنے والوں کو منع کیا تو منشیات فروش امان اللہ، شفیع اللہ، سلمان سمیت عبدالسلام نامی شخص نے اسلح سمیت اسے بلاجواز تشدد کا نشانہ بناکر شدید زخمی کر دیا اور گولیاں چلا کر اسے مارنے کی کوشش مداخلت پر اس ک جان بچی، واقعہ کی رپورٹ تھانہ اے سیکشن پر درج کرائی پولیس نے ایک ملزم کو گرفتار کر کے اسے بھی رشوت کے عیوض رہا کرادیا ہے باقی ملزمان ہمیں شکایات پر سنگین نتائج کی دھمکیاں دے رہے ہیں پولیس بھی ملوث افراد کی سرپرستی کرنے میں مصروف ہے ورثاء نے بالا حکام سے نوٹس لیکر انصاف و تحفظ فراہمی سمیت واقعہ میں ملوث افراد کی گرفتاری کا مطالبہ کیاہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -