وہ شخص جو 67 سال سے نہیں نہایا، صحت ایسی کہ سائنسدان بھی حیران رہ گئے

وہ شخص جو 67 سال سے نہیں نہایا، صحت ایسی کہ سائنسدان بھی حیران رہ گئے
وہ شخص جو 67 سال سے نہیں نہایا، صحت ایسی کہ سائنسدان بھی حیران رہ گئے

  

تہران(مانیٹرنگ ڈیسک) ایران میں ایک عمر رسیدہ آدمی، جو 67سال سے نہایا نہیں ہے اور انتہائی ناقص خوراک کھاتا ہے مگر ایسا صحت مند ہے کہ سائنسدان بھی حیران رہ گئے۔ ڈیلی سٹار کے مطابق اس شخص کا نام ایمو جاجی ہے جو اس وقت 87سال کا ہو چکا ہے مگر اب بھی اس کی صحت قابل رشک ہے۔ وہ تالابوں سے گندہ پانی پیتا ہے اور زیادہ تر سڑک پر گاڑیوں سے ٹکرا کر مرنے والے جانوروں کا کچا گوشت کھاتا ہے۔ وہ ایران کے وسطی صوبے کرمان شاہ میں واقع گاﺅں کھرار دجگہ کا رہائشی ہے اور تمام عمر سے اسی گاﺅں میں رہ رہا ہے۔

رپورٹ کے مطابق ایموجاجی کو 67سال قبل یہ وہم لاحق ہوا کہ نہانا اس کے لیے بدقسمتی کا سبب بنتا ہے لہٰذا تب سے آج تک وہ نہایا نہیں ہے۔ اپنے لائف سٹائل کی وجہ سے زندگی میں نہ تو اس کا کوئی دوست رہا اور نہ ہی اس کی شادی ہوئی۔ پہلے وہ زمین میں کھودی گئی ایک سرنگ میں رہتا تھا تاہم اب گاﺅں کے لوگوں نے اسے ایک جھونپڑی بنا کر دے رکھی ہے جس میں وہ رہتا ہے۔

طبی ماہرین نے کچھ عرصہ قبل ایموجاجی کی شہرت سن کر اس کے گاﺅں کا سفر کیا اوراس کے متعدد ٹیسٹ کیے جن میں اس کی صحت حیران کن طور پر بہتر پائی گئی۔ اسے کوئی سنجیدہ بیماری نہیں تھی۔ ماہرین نے اس کے جسم پر خطرناک بیکٹیریا اور پیراسائٹس کی تلاش کے لیے بھی ٹیسٹ اور سکین کیے لیکن انہیں ناکامی ہوئی۔ایموجاجی کا معائنہ کرنے والی ٹیم کے رکن پروفیسر ڈاکٹر غلام رضا مولوی نے بتایا ہے کہ ایموجاجی کا مدافعتی نظام بھی حیران طور پر اس قدر مضبوط ہے کہ اس عمر میں اس کا تصور بھی نہیں کیا جا سکتا۔ اسے اپنی زندگی میں کبھی کوئی سنگین بیماری لاحق نہیں ہوئی۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -