وہ نوجوان جو محض تفریح طبع کے لیے بنائی گئی اپنی سیلفیاں بیچ کر کروڑ پتی بن گیا

وہ نوجوان جو محض تفریح طبع کے لیے بنائی گئی اپنی سیلفیاں بیچ کر کروڑ پتی بن ...
وہ نوجوان جو محض تفریح طبع کے لیے بنائی گئی اپنی سیلفیاں بیچ کر کروڑ پتی بن گیا
سورس: Twitter/Ghozali_Ghozalu

  

جکارتہ(مانیٹرنگ ڈیسک) سیلفی تو آج ہر کوئی لے رہا ہے لیکن آپ کو یہ سن کر سخت حیرت ہو گی کہ انڈونیشیاءکا ایک نوجوان اپنی سیلیفیاں بیچ بیچ کر کروڑ پتی بن گیا ہے۔ ڈیلی سٹار کے مطابق اس 22سالہ طالب علم کا نام سلطان گستاف الغزالی ہے جو اب تک اپنی سیلفیاں بیچ کر 10لاکھ ڈالر (تقریباً 1کروڑ 76لاکھ روپے)کما چکا ہے۔ سلطان کے کام این ایف ٹی کا بڑھتا ہوا رجحان آیا جس کے ذریعے لوگ آرٹ ورک کے ڈیجیٹل حقوق خریدتے ہیں۔ 

سلطان نے 18سال کی عمر سے اپنی روزانہ ایک سیلفی بنا کر محفوظ کرنی شروع کی تھی اور اب تک اس کے پاس 1ہزار سے زائد سیلفیاں ہو چکی تھیں۔ اس نے ان سیلیفیز کو ایک ویڈیو کی شکل دی جس کا نام اس نے ’غزالی ایوری ڈے‘ رکھا۔ یہ ویڈیو تیار کرتے ہوئے اس نے اپنی ان سیلفیوں کو این ایف ٹی کولیکٹرز کو فروخت کرنے کا سوچا۔

یہ خیال محض تفریح طبع کے لیے تھا مگر اس کے وہم و گمان میں بھی نہیں تھا کہ یہ خیال اسے کروڑ پتی بنا دے گا۔ اس نے اپنی تصاویر این ایف ٹی آکشن سائٹ ’اوپن سی‘ (OpenSea)پر نیلامی کے لیے پیش کر دیں اور چونکہ اسے معلوم تھا کہ ان تصاویر کو کوئی نہیں خریدے گا لہٰذا اس نے ایک تصویر کی قیمت 3ڈالر مقرر کی۔ 

ایک معروف شیف نے یہاں سے سلطان کی چند تصاویر خرید لیں اور سوشل میڈیا پر پوسٹ کر دیں جہاں وہ تیزی وائرل ہوئیں اور لوگ سینکڑوں کی تعداد میں ’اوپن سی‘ پر جا کر سلطان کی تصاویر خریدنے لگے۔ غزالی کا کہنا ہے کہ ”میں نے اب تک اپنے والدین کو نہیں بتایا کہ میں اتنے زیادہ پیسے کما چکا ہوں کیونکہ مجھ میں ہمت ہی نہیں ہے کہ میں انہیں یہ بتا پاﺅں۔“

مزید :

ڈیلی بائیٹس -