پنجاب کے نگران وزیراعلٰی پر اتفا ق کیلئے پارلیمانی کمیٹی قائم، پہلا اجلاس آج طلب

پنجاب کے نگران وزیراعلٰی پر اتفا ق کیلئے پارلیمانی کمیٹی قائم، پہلا اجلاس ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


        لاہو (مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں ) پنجاب کے نگران وزیراعلیٰ کے فیصلے کیلئے پارلیمانی کمیٹی قائم کر دی گئی، سپیکر نے نوٹیفکیشن جاری کر دیا۔حکومتی اتحاد کی جانب سے پارلیمانی کمیٹی میں اسلم اقبال، راجہ بشارت اور ہاشم جواں بخت شامل ہیں جبکہ ملک ندیم کامران، ملک احمد خان اور حسن مرتضیٰ اپوزیشن کی نمائندگی کریں گے، مشاورت کیلئے اجلاس کل دوپہر دو بجے طلب کر لیا گیا۔نگران وزیر اعلیٰ پنجاب کے لیے پاکستان تحریک انصاف نے 2 نام فائنل کر کے پارلیمانی کمیٹی کو بھجوا دیئے، نگران وزیر اعلیٰ پنجاب کے لیے سردار احمد نواز سکھیرا اور نوید اکرم چیمہ کے نام فائنل کیے گئے ہیں۔پی ٹی آئی نے نصیر خان کا نام ڈراپ کر دیا جبکہ دوسرے دونوں امیدواروں کے نام پارلیمانی کمیٹی کو بھجوا دئیے۔دریں اثنانگران وزیراعلیٰ پنجاب کی تقرری کے معاملے پر پاکستان تحریک انصاف اور مسلم لیگ (ن) کی پارلیمانی کمیٹی کے اراکین کے درمیان پہلا رابطہ ہوا ہے۔مسلم لیگ ن کے ملک احمد خان نے پی ٹی آئی کی پارلیمانی کمیٹی کے رکن کے ساتھ ٹیلی فونک رابطہ کیا ہے جس میں انہوں نے کہا کہ آج شام تک لاہور پہنچ جاؤں گا۔ملک احمد خان نے کہا کہ اگر آج جلدی لاہور پہنچ گیا تو آج ہی ورنہ کل صبح تحریک انصاف کی پارلیمانی کمیٹی سے مذاکرات ہوں گے۔ادھر تحریک انصاف کی پارلیمانی کمیٹی کے اراکین بدستور پنجاب اسمبلی میں موجود ہیں، پی ٹی آئی پارلیمانی پارٹی کے رکن راجہ بشارت نے ملک احمد خان سے رابطے کی تصدیق کی ہے۔راجہ بشارت نے بتایا کہ ملک احمد خان نے آج لاہور پہنچنے کی اطلاع دی ہے، جب تک ن لیگی کمیٹی سے بات نہ ہو کچھ بھی بتانے کی پوزیشن میں نہیں ہوں۔سپیکر پنجاب اسمبلی محمد سبطین خان نے نگراں وزیر اعلیٰ کے نام پر مشاورت کیلئے حکومت اور اپوزیشن کے چھ اراکین پر مشتمل پارلیمانی کمیٹی کے قیام کا  نوٹیفکیشن جاری کر دیا جس کا پہلا اجلاس آج (جمعہ)کے روز دوپہر دو بجے منعقد ہوگا۔اسمبلی سیکرٹریٹ کی طرف سے جاری کئے گئے نوٹیفکیشن کے مطابق پارلیمانی کمیٹی میں اپوزیشن اور حکومت کے تین تین اراکین کو شامل کیا گیا۔پارلیمانی کمیٹی نگراں دونوں جانب سے نگراں وزیر اعلی کے لئے آنے والے ناموں پر مشاورت کرے گی۔کمیٹی تین روز میں وزیراعلی پرویز الٰہی اور قائد حزب اختلاف حمزہ شہباز کی جانب سے دیئے گئے ناموں میں سے کسی ایک نام پر اتفاق رائے کیلئے نشستیں کرے گی۔پارلیمانی کمیٹی میں اتفاق نہ ہونے کی صورت میں معاملہ الیکشن کمیشن کے پاس چلا جائے گا۔
پارلیمانی کمیٹی

مزید :

صفحہ اول -