سپریم کورٹ میں قمرالزمان کائرہ کےخلاف توہین عدالت کی درخواست دائر

سپریم کورٹ میں قمرالزمان کائرہ کےخلاف توہین عدالت کی درخواست دائر

اسلام آباد (ثناءنیوز) سپریم کورٹ میں وفاقی وزیر اطلاعات قمر زمان کائرہ کے خلاف توہین عدالت کی درخواست دائر کر دی گئی۔ جمعرات کو درخواست گزار محمود اختر نقوی کی جانب سے دائر درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ قمر زمان کائرہ وزیر اطلاعات و نشریات یہ کہہ کر توہین عدالت کر رہے ہیں کہ دستور میں کہیں نہیں لکھا کہ آئین کی تشریح سپریم کورٹ کرے۔ پارلیمنٹ عوام کا منتخب فورم ہے عدالتیں عوامی ادارہ نہیں سیاستدانوں کا احتساب صرف عوام کر سکتے ہیں۔ عدالت خود نوٹس لے تو تھرڈ پارٹی بن جاتی ہے اداروں میں تصادم نہیں چاہتے یہ کون سے ادارے کا ذکر کر رہے ہیں تو یہ واضح ہے کہ کائرہ معزز عدالت عظمیٰ پاکستان سے تصادم کا اشارہ دے رہے ہیں۔ وہ کہتے ہیں تصادم ہوتا تو سید یوسف رضا گیلانی کے فیصلے کے بعد ہوتا۔ تناﺅ کی صورت میں سسٹم کو یقیناً خطرات ہوں گے جمہوریت پر شب خون مارنے والے بہت سے ادارے شامل ہیں مگر ابھی انہوں نے کچھ نہیں سیکھا تو ان کی حکومت کے ماتحت دیگر ادارے ہیں مگر معزز عدالت عظمیٰ پاکستان کا ادارہ موجودہ حکومت قمر زمان کائرہ ،وزیر، وزارت اطلاعات و نشریات سے دائرہ اختیار میں نہیں ہے تمام اداروں کو اپنے اپنے دائرہ اختیار میں رہ کر کام کر نا چاہیے اور یہ بھی کہتے ہیں کہ عدالت جب نوٹس دیتی ہے تو وہ تھرڈ پارٹی بن جاتی ہے تو قمر زمان کائرہ وزیر اطلاعات و نشریات نے مکمل طور پر توہین عدالت آئین کے آرٹیکل 204 اور توہین عدالت آرڈیننس 2003 ءکی ہے۔ درخواست گزار نے موقف اختیار کیا ہے کہ قمر زمان کائرہ نے توہین عدالت بھی کی ہے اور ممبر قومی اسمبلی میں حلف جو اٹھایا ہے اس کی بھی خلاف ورزی کی ہے۔

مزید : صفحہ اول

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...