خطے کی محرومیاں دور کرنے کےلئے دونوں بیٹوں کو پارلیمنٹ میں پہنچایا: یوسف رضا گیلانی

خطے کی محرومیاں دور کرنے کےلئے دونوں بیٹوں کو پارلیمنٹ میں پہنچایا: یوسف رضا ...

ملتان (کامرس رپورٹر + خصوصی رپورٹر + سٹاف رپورٹر) سابق وزیراعظم پاکستان سید یوسف رضا گیلانی نے کہا ہے کہ ضمنی الیکشن حلقہ این اے 151 کے نتائج سے ثابت ہوتا ہے کہ اللہ تعالیٰ کے بعد حاکمیت صرف اور صرف عوام کی ہوتی ہے۔ سرائیکی خطے کی عوام کی محرومیوں کو دورکرنے اور ان کی آواز پارلیمنٹ میں پہنچانے کےلئے میں نے اپنے دونوں بیٹوں کو پارلیمنٹ میں ایم این اے بنا کر بھیجنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ضمنی الیکشن حلقہ این اے 151 میں سید عبدالقادر گیلانی کے جیتنے کے بعد گیلانی ہاﺅس میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کیا انہوں نے مزید کہا ہے کہ یہ الیکشن لڑنے کا موقع نہیں تھا میری نااہلی کے بعد میرا الیکشن لڑنا ضروری نہیں تھا۔ حلقہ این اے 151 کی سیٹ پیپلز پارٹی کی سیٹ ہے اور لازم تھا کہ یہ سیٹ ہمیں ملے میں نے سرائیکی خطے کی محرومیوں کو اور سرائیکی صوبے کی آواز پارلیمنٹ میں پہنچانے کےلئے علی موسیٰ گیلانی اور سید عبدالقادر گیلانی کو پارلیمنٹ میں پہنچایا ہے۔ ضمنی الیکشن کے نتائج ثابت کرتے ہیں کہ اللہ تعالیٰ کی حاکمیت کے بعد حاکمیت صرف عوام کی ہے ہم حترمہ بے نظیر بھٹو شہید ‘ ذوالفقار بھٹو کے مشن اور ان کے وعدوں کو پورا کریں گے۔ سال 2008ءمیں اس حلقہ سے میں نے 80 ہزار ووٹ لئے تھے اب جبکہ ہمارے اکثریت علاقوں سے ووٹرز لسٹیں کاٹ دی گئیں ہیں لیکن اس کے باوجود محترمہ بے نظیر بھٹو کے مشن کو لے کر چلنے والے کامیاب ہوئے ہیں۔ دریں اثناء نومنتخب ممبر قومی اسمبلی سید عبدالقادر گیلانی نے کہا ہے کہ سید یوسف رضا گیلانی کی نا اہلی کے بعد 19 جولائی کا دن عوام کے سامنے ہماری پیشی کا دن تھا اور 64 ہزار غیور عوام پر مشتمل لارچ بنچ نے پیپلز پارٹی اور سید یوسف رضا گیلانی کے حق میں فیصلہ دے دیا ہے۔ اللہ تعالیٰ کے بعد عوام ہی حاکمیت کی علمبردار ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں ضمنی الیکشن حلقہ این اے 151 جیتنے کے بعد جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے مزید کہا ہے کہ یوسف رضا گیلانی کے نااہلی کے بعد حلقہ این اے 151 کی سیٹ خالی ہوئی اور پیپلز پارٹی نے مجھے ٹکٹ دیا۔ عدلیہ کے فیصلے کے بعد ہم سب سے بڑی عدالت عوام کے سامنے پیش ہوئے اور 19 جولائی کا دن ہماری پیشی کا دن تھا اور 64 ہزار غیور عوام پر مشتمل لارج بنچ نے عوام اور ہمارے حق میں فیصلہ سنایا۔ عوام کی طاقت ہی اللہ تعالیٰ کے بعد سب سے بڑی طاقت ہے اور طاقت کا سرچشمہ ہے۔ محسن ملتان ‘ محسن جنوبی پنجاب اور محسن سرائیکی کو نااہل قرار دیا گیا۔ سید یوسف رضا گیلانی نے 73ءکا آئین بحال کیا۔ ملتان کے علاقے کو سنوارا اور سرائیکی صوبے کےلئے قومی اسمبلی میں قرارداد منظور کی ۔ انہوں نے مزید کہا ہے کہ عدلیہ سے یکجہتی کرتے ہوئے تحریک انصاف ‘ مسلم لیگ ن جماعت اسلامی نے مخالف امیدوار کی حمایت کی لیکن عوام نے ثابت کر دیا ہے کہ عوام پیپلز پارٹی کے ساتھ ہے میں عمران خان کو بتانا چاہتاہوں کہ ایک بال سے 2 وکٹ کیسے گرائی جاتی ہیں ہم نے ایک بال سے چار وکٹیں گرا دی ہیں۔

مزید : صفحہ اول