بااثر پٹواری ساندہ کلاں کیخلاف جعل سازی کی درخواستیں ‘اینٹی کرپشن نے طلب کرلیا

بااثر پٹواری ساندہ کلاں کیخلاف جعل سازی کی درخواستیں ‘اینٹی کرپشن نے طلب ...

لاہور (اپنے نمائندہ سے) ریکارڈ میں ردوبدل کرنے کا لاکھوں روپے رشوت وصولی کی شکایت آنے اور جعلی پٹواریوں کو ریکارڈ پر تعینات کرنے کے الزام میں محکمہ اینٹی کرپشن نے موضع ساندہ کلاں کے پٹواری کو ریکارڈ سمیت طلب کرلیا ہے تاہم بار بار نوٹس دینے کے باوجود پٹواری محکمہ اینٹی کرپشن میں ریکارڈ پیش کرنے سے گریز کر رہا ہے جس کے باعث امحکمہ اینٹی کرپشن کے انویسٹی گیشن آفیسروں کیلئے جہاں بغیر ریکارڈ کے تحقیقات کرنا عذاب بن چکا ہے وہاں درخواست گزار بھی صرف اپنی حاضری لگانے اور ملزم کے انتظار میں سارا سارا دن کھڑے رہنے کی وجہ سے سراپا احتجاج بن چکے ہیں۔ مزید معلوم ہوا ہے کہ موضع ساندہ کلاں کے سینکڑوں رہائشیوں سے منہ مانگی رشوت وصول کرنے اور ریکارڈ میں ہیرا پھیری کرتے ہوئے شہریوں کو بار بار پٹوار خانے کے چکر لگوانے کے باعث شہریوں کی ایک قابل ذکر تعداد مذکورہ پٹواری اسرار حسین شاہ کے خلاف سراپا احتجاج بن چکی ہیں۔ ایک رہائشی بابر طفیل نے بھی محکمہ اینٹی کرپشن میں درخواست دیتے ہوئے الزام عائد کیا ہے کہ ساندہ کلاں کے پٹواری اسرار شاہ نے فرد برائے ملکیت جاری کرنے کے عوض 12 لاکھ روپے رشوت وصول کی ہے اور ریکارڈ میں جان بوجھ کر غلطی کرتے ہوئے بعدازاں اس کی درستگی کرنے کے حوالے سے بے پناہ تنگ بھی کیا اور کئی ماہ تک پٹوار خانے کے چکر لگوائے تاہم 12 لاکھ روپے وصول کرنے کے بعد فرد برائے ملکیت جاری کی ۔ اس طرح ساندہ کے ایک اور رہائشی میاں مقصود نامی شخص نے بھی محکمہ اینٹی کرپشن میں درخواست دیتے ہوئے اپنا مو¿قف اختیار کیا تھا کہ ساندہ کلاں کے سابق ایونیو آفیسر طارق بیگ اور پٹواری نے ملی بھگت سے ڈبل وراثت کا اندراج کرتے ہوئے زائد بیعہ نامہ کے انتقال پاس کیے ہیں جس میں موجودہ پٹواری اسرار شاہ بھی شامل ہے جس کا انتقال وراثت نمبر10868 ہے او ررقبہ ایک کنال کے بجائے 8 کنال1 مرلہ درج کیا گیا ہے جن کے انتقال نمبر 63291-15331-96237-32523-7922-3238-2379 ہے اور اس کیس کی انکوائری شاہ رخ نیازی کو سونپی گئی تھی مگر ایک مدعی کی جانب سے جھوٹی درخواست مذکورہ پٹواری نے سابق ڈائریکٹر اینٹی کرپشن کو دی اور مدعی کو سنے بغیر ہی انکوائری تبدیل کر دی گئی جس کا آج تک کوئی سراغ نہ مل سکا ہے اور مدعی میاں مقصود بھی گزشتہ دنوں سخت گرمی میں اینٹی کرپشن میں کیس کی پیشی کے دوران آرہا تھا کہ دفتر اینٹی کرپشن کے باہر گر کر جاں بحق ہوگیا۔ مذکورہ پٹواری اسرار شاہ کے خلاف انویسٹی گیشن آفیسر حاجی ریاض‘ چودھری مقبول‘ شاہ رخ نیازی اور زبیر اخلاق سمیت دیگر کے پاس انکوائریاں زیر سماعت ہیں مگر مذکورہ پٹواری بار بار نوٹس ملنے کے باوجود محکمہ اینٹی کرپشن کو ریکارڈ نہیں کر رہا ہے جس کے باعث اینٹی کرپشن کے انویسٹی گیشن آفیسر بھی بغیر ریکارڈ کے تحقیقات کرنے کی بجائے مذکورہ پٹواری کی انکوائریوں کو زیر التوا رکھنے پر مجبور ہوچکے ہیں تاہم اینٹی کرپشن پر پیشی پر آنے والے شہری محکمہ اینٹی کرپشن کے انویسٹی گیشن افسراں کی خاموشی کے باعث سراپا احتجاج کر رہے ہیں۔ افسروں کا کہنا ہے کہ پٹواری درخواست تو لینے کیلئے دباﺅ ڈال رہے ہےں مگر سنگین نتائج کی دھمکیاں بھی دے رہا ہے ۔ شہریوں نے ڈی جی اینٹی کرپشن سے فوری نوٹس لینے کی اپیل کی ۔ اس ضمن میں انویسٹی گیشن آفیسروں کا کہنا ہے کہ ریکارڈ کی عدم دستیابی کے بغیر انکوائری کرنا ممکن نہ ہے۔دوسری جانب پٹواری اسار شاہ نے شہریوں کی جانب سے دی جانیوالی درخواستوں کو جھوٹی درخواستیں قرار دیا ہے اور تمام الزامات کوبے بنیاد دلوایا۔

مزید : میٹروپولیٹن 1

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...