رجسٹریشن برانچوں میں رجسٹری کی مد میں بے ضابطگیاں نظام تباہ ہوکر رہ گیا

رجسٹریشن برانچوں میں رجسٹری کی مد میں بے ضابطگیاں نظام تباہ ہوکر رہ گیا

لاہور (اپنے نمائندہ سے) ضلع لاہور کی رجسٹریشن برانچوں کے انچارج ڈی ڈی او رجسٹریشن نے کمائی کرنے کا نیا ذریعہ اپناتے ہوئے جائیداد کی رجسٹری پاس کرنے کے لئے حدود کے قانون کی دھجیاں اڑا دی ہیں اور باقاعدہ ڈی ڈی او رجسٹریشن نے رقم دو اور رجسٹری لو کا نیا قانون پاس کرتے ہوئے اس امر کا خیال بھی نہیں کیا ہے کہ جائیداد کس ٹاﺅن کی حد میں آتی ہے واہگہ ٹاﺅن کی رجسٹریاں شالیمار ٹاﺅن، راوی ٹاﺅن کی عزیز بھٹی ٹاﺅن، داتا گنج بخش ٹاﺅن کی سمن آباد ٹاﺅن، گلبرگ ٹاﺅن کی نشتر ٹاﺅن کا عملہ انتہائی دیدہ دلیری سے لین دین کے معاملات طے پانے کے بعد سب رجسٹراروں سے پاس کروانے میں مصروف ہے ڈی ڈی او رجسٹریشن کے ان اقدامات سے جہاں رجسٹریشن سسٹم کا نظام تباہ ہو کر رہ گیا ہے وہاں فراڈ، جعلسازی کے واقعات میں بھی دن بدن اضافہ ہوتا چلا جا رہا ہے اور بورڈ آف ریونیو شعبہ سٹیمپ برانچ کے عملے کی کارکردگی بھی سوالیہ نشان بن کر رہ گئی ہے معلوم ہوا ہے کہ صوبائی دارلحکومت لاہور کی رجسٹریشن برانچوں کے انچارج ڈی ڈی او رجسٹریشن سے رجسٹری محرروں کو کسی بھی علاقہ کی رجسٹری پاس کرنے کے لئے فری ہینڈ دیدیا ہے جس کا مقصد اس کام کو پائیہ تکمیل تک پہنچانے کے لئے بڑی رقم بطور رشوت وصول کرنا ہے جس کے باعث تمام رجسٹریشن برانچوں میں رجسٹری محرروں کے ذریعے یہ پریکٹس کی جا رہی ہے جس میں شالیمار ٹاﺅن، واہگہ ٹاﺅن اور راوی ٹاﺅن کی رجسٹریشن برانچیں سرفہرست ہیں راوی ٹاﺅن کی حدود میں آنیوالے علاقہ جات کی رجسٹریاں شالیمار ٹاﺅن کا رجسٹری محرر پکڑ رہا ہے جبکہ شالیمار ٹاﺅن کی رجسٹریاں واہگہ ٹاﺅن کا رجسٹری محرر پاس کروا رہا ہے اسطرح ڈی ایچ اے کی اراضی کی رجسٹریاں عزیز بھٹی ٹاﺅن کا رجسٹری محرر پاس کروانے میں مصروف ہے داتا گنج بخش ٹاﺅن اور سمن آباد ٹاﺅن کا اہلکار بھی حدود توڑنے میں ماہر ہیں اور ایک دوسرے کی ٹاﺅنوں کی رجسٹریاں بے دھڑک ہو کر کرنے میں مصروف ہیں جس سے فراڈ، جعلسازی اور دھوکہ دہی کے واقعات میں بے پناہ اضافہ ہو چکا ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...