سپریم کورٹ میں مشرف حملہ کیس کی سماعت غیر معینہ عرصے تک ملتوی

سپریم کورٹ میں مشرف حملہ کیس کی سماعت غیر معینہ عرصے تک ملتوی

اسلام آباد(ثناءنیوز )سپرےم کورٹ نے مشرف حملہ کےس کی سماعت غےر معےنہ مدت تک ملتوی کر دی مشرف حملہ کیس کی سماعت کے دوران وزارت دفاع کی جانب سے دستاویزات جمع کرا دی گئیں۔ تاہم مقدمہ کی سماعت غیر معینہ مدت تک ملتوی کر دی گئی ۔ جمعرات کو چیف جسٹس افتخار محمد چودھری کی سر براہی میں جسٹس جواد ایس خواجہ اور جسٹس خلجی عارف حسین پر مشتمل تین رکنی بنچ نے مقدمہ کی سماعت کی ۔ سماعت کے دوران وزارت دفاع کی جانب سے مجیب الرحمن ایڈووکیٹ عدالت میں پیش ہوئے انہوں نے بتایا کہ وزارت دفاع کی جانب سے عدالتی حکم پر دستاویزات جمع کرا دی گئی ہیں تاہم انہوں نے مقدمہ کی سماعت ملتوی کر نے کی استدعا کی ۔ عدالت نے ان کی استدعا منظور کرتے ہوئے سماعت مقدمہ کی سماعت غیر معینہ مدت ملتوی کر دی ۔ اس موقع پر مقدمہ کے دو مبینہ ملزمان عامر سہیل اور رانا نوید کی جانب سے حشمت حبیب ایڈووکیٹ نے موقف اختیار کیا کہ انہیں وزارت دفاع کی جانب سے جمع کرائی گئی دستاویزات کی نقول فراہم کی جائیں اور وزارت دفاع کے جواب پر جواب الجواب جمع کرانے کی اجازت دی جائے تو عدالت نے انہیں دستاویزات کی نقول فراہم کرنے کی ہدایت کر دی۔ دریں اثناء مذکورہ بنچنے لال مسجد اور جامعہ حفصہ آپریشن میں معصوم لوگوں کے قتل کئے جانے کے خلاف مقدمہ کی سماعت تین ہفتوں کے لیے ملتوی کر دی۔ مقدمہ کی سماعت کے دوران ایڈیشنل انسپکٹر جنرل اسلام آباد پولیس طاہر عالم خان عدالت میں پیش ہوئے تاہم عدالت نے بغیر سماعت کے کیس کو ملتوی کر دیا ۔

مزید : صفحہ آخر