ایران یمنی امور میں مداخلت سے گریز کرے، صدر عبد ربہ ہادی منصور

ایران یمنی امور میں مداخلت سے گریز کرے، صدر عبد ربہ ہادی منصور

صنعاء(آن لائن )یمن میں پاسداران انقلاب ایران کے ایک سابق کمانڈر کے زیر قیادت جاسوسی کے ایک رنگ سے وابستہ افراد کو گرفتار کرلیا گیا ہے جبکہ یمنی صدر عبد ربہ ہادی منصور نے ایران سے کہا ہے کہ وہ ان کے ملک کے داخلی امور سے دوررہے۔یمن کی سرکاری خبررساں ایجنسی سبا نے اطلاع دی ہے کہ جاسوسوں کا سیل دارالحکومت صنعا میں ایس ایم ایس پیغامات کے ذریعے کام کررہا تھا۔یمنی وزارت داخلہ کے ایک عہدے دار کا کہنا ہے کہ ''گرفتار کیے گئے تمام افراد یمنی ہیں۔یمنی صدر عبد ربہ منصور ہادی نے جاسوسوں کی گرفتاری کے بعد ایران سے کہا ہے کہ وہ یمن کے داخلی امور میں مداخلت سے گریز کرے اور دور رہے۔انھوں نے کہا کہ ''ہم امید کرتے ہیں ہمارے ایرانی بھائی یمن کے امور میں مداخلت نہیں کریں گے اور وہ یمن کی حساس صورت حال کو ملحوظ رکھیں گے۔اب ایران کو تنہا چھوڑ دیں کیونکہ بہت ہوچکی ہے۔ واضح رہے کہ امریکا بھی ماضی میں ایران پر یمن کے جنوبی اور شمالی علاقے میں مداخلت کا الزام عاید کرچکا ہے۔یمنی حکومت کو جنوب میں اس وقت علاحدگی پسند کی تحریک اور شمال میں اہل تشیع حوثیوں کی بغاوت کا سامنا ہے۔اس کے علاوہ وہاں القاعدہ کے جنگجو جنوبی صوبوں ابین اور شیبوی میں سرکاری فورسز کے خلاف برسرپیکار ہیں اور یمنی فوج القاعدہ کے خلاف مئی سے ایک فیصلہ کن کارروائی کررہی ہے۔صنعا میں متعین امریکی سفیر جیرالڈ فئیراسٹین نے اسی سال کے آغاز میں الزام عاید کیا تھا کہ ''شیعہ ایران شمالی یمن میں شیعہ باغیوں اور جنوب میں علاحدگی پسندوں کے ساتھ مل کر کام کررہا ہے۔

مزید : عالمی منظر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...