مجرمانہ حکومتی غفلت نے زراعت کو تباہی کے دہانے پر لاکھڑاکردیا

مجرمانہ حکومتی غفلت نے زراعت کو تباہی کے دہانے پر لاکھڑاکردیا

لاہور(کامرس رپورٹر) حکومت پاکستان کی مجرمانہ غفلت اور اس کی قومی اداروں کی تباہی کی پالیسی نے پاکستان کی زراعت کو تباہی کے دھانے پر لاکھڑا کیا ہے۔ بھارت اپنی ہٹ دھرمی پر قائم ہے بلکہ وہ دریائے چناب اور سندھ پر ناجائز ڈیم تعمیر کر کے پاکستان کی زراعت کو ناقابل تلافی نقصان پہنچا رہا ہے۔ کسان بورڈ پاکستان کے مرکزی صدر سردار ظفر حسین خان نے کاشت کاروں کے بہت بڑے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بھارتی آبی جارحیت سے پاکستان کی زرعی زمینیں بنجر ہونا شروع ہو چکی ہیں اور حکومت خاموش تماشائی کا کردار ادا کر رہی ہے۔ نیموبازگو ڈیم کی ناجائز تعمیر پر عالمی ثالثی عدالت سے رجوع نہ کرنے کا حکومتی فیصلہ قابل مذمت ہے۔ انہوں نے تمام محب وطن سیاسی قیادت سے مطالبہ کیا کہ وہ بھارت کی اس ننگی جارحیت کے خلاف آواز بلند کریں، اُس پر سیاسی، سفارتی دباﺅ بڑھایا جائے اور پاکستانی زراعت کو تباہی سے بچایا جائے۔ انہوں نے حکومت پاکستان سے مطالبہ کیا کہ وہ فوری طور پر عالمی ثالثی عدالت سے رجوع کرے، بصورت دیگر پاکستان بھر کے کاشت کار حکومت پاکستان کی مجرمانہ غفلت پر اور بھارت کی طرف سے سندھ اور چناب پر ناجائز ڈیموں کی تعمیر کے خلاف اسلام آباد پارلیمنٹ ہاﺅس کا گھیراﺅ کریں گے۔ انہوں نے چیف جسٹس آف پاکستان سے بھی درخواست کی کہ وہ از خود نوٹس کے تحت اس اہم قومی مسئلہ اور حکومت کی مجرمانہ غفلت اور اس کے نتیجے میں پہنچنے والے نقصان اور مستقبل میں اس کے تدارک کے لےے عدالتی کمیشن کا قیام عمل میں لایا جائے۔

مزید : کامرس