دودھ کو محفوظ رکھنے کیلئے اپنا یا جانیوالا ایسا غلیظ طریقہ جس کا آپ سوچ بھی نہیں سکتے

دودھ کو محفوظ رکھنے کیلئے اپنا یا جانیوالا ایسا غلیظ طریقہ جس کا آپ سوچ بھی ...
دودھ کو محفوظ رکھنے کیلئے اپنا یا جانیوالا ایسا غلیظ طریقہ جس کا آپ سوچ بھی نہیں سکتے

  

ماسکو (نیوز ڈیسک) ریفریجریٹر کے ذریعے خوراک کو محفوظ رکھنے کا طریقہ 1930ءکی دہائی میں متعارف ہوا اور اس سے پہلے مختلف ممالک کے لوگ اپنے اپنے ٹوٹکوں سے خوراک کو محفوظ رکھا کرتے تھے۔ تازہ دودھ کو خراب ہونے سے بچانے کیلئے ایک ٹوٹکہ قدیم روس اور فن لینڈ کے لوگ استعمال کیا کرتے تھے جس کے متعلق سن کر شائد آپ اچھا محسوس نہ کریں لیکن آج کے سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ یہ طریقہ کارگر تھا۔

یہ لوگ موسم گرما میں دودھ کو محفوظ رکھنے کیلئے اس میں ایک چھوٹا سا مینڈک ڈال دیا کرتے تھے جسے ”روسی براﺅن فراگ“ کے نام سے جانا جاتا ہے۔ اگرچہ اس کہانی کو کئی لوگ مشکوک قرار دیتے رہے ہیں لیکن حال ہی میں نہ صرف اس کے تاریخی شواہد مل گئے ہیں بلکہ ماسکو سٹیٹ یونیورسٹی کے سائنسدان ڈاکٹر البرٹ لیبیدیو نے روسی براﺅن فراگ پر ٹیسٹ کر کے یہ بھی معلوم کر لیا ہے کہ اس کی جلد سے ایسے کیمیکل خارج ہوتے ہیں جو بیکٹیریا کو ختم کر دیتے ہیں اور یہ بات بالکل درست ہے کہ اگر اسے دودھ میں ڈال دیا جائے تو یہ خراب نہ ہو گا۔ ان کی تحقیق کے مطابق اس مینڈک کی جلد پر 76 مختلف قسم کے پیپٹائڈ (پروٹین کی قسم) پائے جاتے ہیں جن میں سے 27 بیکٹیریا کش ہیں۔ مینڈک ڈالنے کے بعد دودھ کے ذائقے اور خوشبو کا کیا حال ہوتا ہے اس کے بارے میں ماہرین نے تاحال کوئی تحقیق نہیں کی ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس