بے وفا شوہر کو زندگی کا سب سے بڑا دھچکا لگ گیا، انٹرنیٹ سے ’آرڈر‘ کی گئی خاتون اپنی ہی بیگم نکلی اور پھر۔۔۔

بے وفا شوہر کو زندگی کا سب سے بڑا دھچکا لگ گیا، انٹرنیٹ سے ’آرڈر‘ کی گئی ...
بے وفا شوہر کو زندگی کا سب سے بڑا دھچکا لگ گیا، انٹرنیٹ سے ’آرڈر‘ کی گئی خاتون اپنی ہی بیگم نکلی اور پھر۔۔۔

  

سڈنی(مانیٹرنگ ڈیسک) بزرگ کہا کرتے ہیں کہ زناء ایسا قرض ہے جو لیتا تو مرد ہے لیکن چکانا اس کی عورت کو پڑتا ہے۔ اس آسٹریلوی شخص کی کہانی عبرت حاصل کرنے کے لیے کافی ہے ایک بار پڑھیے اور گناہ سے توبہ کیجیے۔ 40سالہ پیٹر اینڈرسن آسٹریلیا کے شہر پرتھ کا رہائشی ہے اورایک کان کن ہے جسے مختلف پراجیکٹس کیلئے کئی ممالک میں بھیجا جاتا ہے۔ ایک دن ان کی فلائٹ ملتوی ہو گئی اور کمپنی نے ان کی رہائش کے لیے ہوٹل میں کمرے بک کروا لیے۔ پیٹر کا گھر محض 40منٹ کے فاصلے پر تھا لیکن اس نے اپنے چند ساتھیوں کے ساتھ مل کر اپنی رات کو رنگین بنانے کا پروگرام بنا لیا۔ انہوں نے ہوٹل کی بار سے شراب اپنے کمرے میں منگوائی اور ایک ویب سائٹ سے کال گرل کوبک کیا ۔ وہ شراب پی رہے تھے اور ساتھ کال گرل کا انتظار کر رہے تھے۔ پھر اچانک دروازے کی گھنٹی بجی۔ پیٹرنے ہی جا کر دروازہ کھولا اور سامنے کا منظر دیکھ کر اس کے دل کی دھڑکن جیسے تھم سی گئی، سامنے اسی کی بیوی کھڑی تھی۔

مزید پڑھیں:شوہر نے اپنی بے وفا بیوی کا پول انٹرنیٹ پر کھول دیا، دنیا کو حیران و افسردہ کردیا

پیٹر اینڈرسن کا کہنا ہے کہ پہلے تو ایسا لگا کہ جیسے میں رنگے ہاتھوں پکڑا گیا لیکن پھر احساس ہوا کہ میری بیوی نے پیشہ ور طوائفوں جیسا لباس پہن رکھا تھا۔مجھے سمجھ نہیں آیا کہ اس نے یہ پیشہ کیوں اپنا رکھا تھا کیونکہ ہمارے پاس روپے پیسے کی کوئی کمی نہیں تھی، شاید میرے لمبی فلائٹس پر جانے کے بعد وہ تنہائی کا شکار ہو جاتی تھی اسی لیے اس راہ پر چل نکلی۔ پیٹر کا کہنا تھا کہ جب میں نے اپنی بیوی سے اس بارے میں پوچھا تو اس نے انکشاف کیا کہ وہ گزشتہ 8سال سے خفیہ طور پر یہ دھندہ کر رہی تھی۔دلچسپ بات یہ ہے کہ مقامی میڈیا کے مطابق اس شخص نے مذکورہ ویب سائٹ کے خلاف مقدمہ کرانے کا ارادہ بھی کررکھا ہے کیونکہ اس کا کہناہے کہ ان کا اشتہار گمراہ کن تھا اور اسے واضح طور پر معلوم نہیں ہوسکا کہ اس کا سامنا کس سے ہونے والا ہے۔ لہٰذا اسے رقم واپس کی جانی چاہیے۔

نوٹ: مذکورہ شخص کا پیشہ فلائٹ اٹینڈنٹ لکھا گیا تھا جو کہ درست نہیں، غلطی ٹھیک کر دی گئی ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس