کراچی میں رینجرز کے اختیارات کی مدت میں تویسع ما معاملہ ایک بار بھر تنازع بن گیا

کراچی میں رینجرز کے اختیارات کی مدت میں تویسع ما معاملہ ایک بار بھر تنازع بن ...

 کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک) کراچی میں رینجرزکے اختیارات میں توسیع کا معاملہ ایک بار پھر تنازع بنتا جا رہا ہے۔ رینجرز کے اختیارات میں توسیع کی تاحال سمری جاری نہیں ہوسکی جس کی وجہ سے ایک بار پھر وفاقی وزارت داخلہ اور سندھ حکومت میں تناو بڑھنے لگا ہے۔جیو نیوز کے مطابق سابق صدر آصف زرداری بھی امریکہ سے دبئی پہنچ رہے ہیں جبکہ پاکستان میں موجود پیپلز پارٹی کی اعلیٰ قیادت بھی دبئی جارہی ہے۔ اس سلسلے میں وزیر اعلیٰ سندھ قائم علی شاہ اور وزیر داخلہ سندھ سہیل سیال کو دبئی طلب کر لیا گیا ہے۔ذرائع کے مطابق رینجرز کے اختیارات میں توسیع آصف زرداری کی منظوری سے دی جائے گی۔امید ہے کہ وہ کل دبئی پہنچ جائیں گے۔واضح رہے کہ کراچی میں رینجرز کے اختیارات میں توسیع منگل کی رات بارہ بجے ختم گئی۔ وزیراعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ نے کہا ہے کہ کراچی میں چارسنگین جرائم پر رینجرزکو اختیارات دیئے گئے ہیں۔ کراچی کے علاوہ رینجرز کو سندھ میں کہیں بھی اختیارات نہیں دیئے گئے۔رینجرز اور پولیس کو اپنے اختیارات سے تجاوز نہیں کرنا چاہئے۔لاڑکانہ میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ کسی کو اپنے دائرہ کار سے باہر نہیں نکلنا چاہئے۔ کراچی میں امن و امان کی صورتحال بہتر ہو رہی ہے۔پولیس کو جدید ہتھیاروں سے لیس کر دیا۔کئی بڑے دہشتگردوں کو گرفتار کیا۔انہوں نے کہا کہ سندھ کے چیف جسٹس کے بیٹے کے اغوا سے متعلق بھی کئی قیاس آرائیاں کی گئیں۔ امجد صابری کیس پر بھی پیشرفت ہوئی ہے۔سٹریٹ کرائم کی وارداتوں پر بھی قابو پالیا ہے۔ لاڑکانہ میں رینجرز کی کارروائی کی انکوائری کی جارہی ہے۔جب کراچی آپریشن شروع ہوا تو ضوابط کار طے کئے گئے تھے۔اس آپریشن کے پیچھے عدلیہ کی ہدایات بھی تھیں۔اس سے قبل سندھ میں رینجرز کے اختیارات کی توسیع کے معاملہ پر وزیرداخلہ چودھری نثار علی خان نے وزیراعلیٰ سندھ قائم علی شاہ کو خط لکھ دیا۔، سندھ میں رینجرز کے اختیارات کی توسیع کے معاملہ پر وزیرداخلہ چودھری نثار علی خان نے وزیراعلیٰ سندھ قائم علی شاہ کو خط لکھا۔جس میں وزیر داخلہ کا کہنا ہے کہ سندھ میں رینجرز کے قیام اور اختیارات کی توسیع کے حوالے سے تاخیر دیکھنے میں آئی،سندھ میں رینجرز کی کاروائیوں کو قانونی جواز فراہم کرنے میں غیر ضروری تاخیر نہ صرف آپریشن کو متاثر کرے گی بلکہ سول آرمڈ فورسسز کے کے جذبے اور انکی کارکردگی پر بھی منفی اثرات مرتب کرے گی۔خط میں کہا گیا ہے کہ باہمی مشاورت کے نتیجے میں شروع کئے گئے عمل کو اپنے منطقی انجام تک پہنچانا اور اسکے راستے میں حائل رکاوٹوں کو دور کرنا وفاق اور صوبائی حکومت کی مشترکہ ذمہ داری ہے، ہم سب کو مل کر کراچی امن و امان کے لیے کردار ادا کرنا ہوگا۔وزیرداخلہ نے مشورہ دیا کہ رینجرز کے اختیارات کی توسیع کے مسئلے کے حل کے لئے وزیر اعلیٰ اپنے اختیارات استعمال کریں

مزید : علاقائی


loading...