''تمہاری یہ چیز پورے علاقے میں پھیلا دیں گے'' نوجوان پاکستانی لڑکی سے جنسی زیادتی کے بعد ایسی دھمکی دیدی گئی کہ آپ کی آنکھوں میں بھی آنسو آ جائیں گے

20 جولائی 2018 (11:34)

پیر محل (ویب ڈیسک) ایف ایس سی کی طالبہ کو اغواء کے بعد اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنادیا گیا، ملزمان نے بلیک میل کرنے کیلئے برہنہ تصاویر بنانے کے ساتھ سادہ کاغذات پر انگوٹھے اور دستخط بھی کروالئے اور دھمکی دی کہ اگر کسی کو بتایا تو برہنہ تصاویر پورے علاقے میں پھیلا دیں گے، قانونی کارروائی سے بچنے کیلئے جعلی نکاح نامہ عدالت میں پیش کر دیا۔

روزنامہ خبریں کے مطابق نواحی گاؤں 319گ ب کے مکین محمد شریف کی بیٹی جو کہ گورنمنٹ ڈگری کالج برائے خواتین پیر محل میں ایف ایس سی کی طالبہ ہے کہ مورخہ 02-07-18کمپیوٹر سائنس کا پریکٹیکل دینے کی غرض سے کالج جا رہی تھی کہ کمیٹی باغ کے قریب کار میں سوار پہلے سے موجود ملزمان اللہ دتہ وغیرہ سکنہ 747گ ب نے اسلحہ کے زور پر طالبہ کو اغواء کر لیا اور لاہور لے جا کر قید کرتے ہوئے اجتماعی زیادتی کا نشانہ بناتے رہے۔

واقعہ کا علم ہونے پر ورثاء نے جب ملزمان سے رجوع کیا تو انہوں نے بذریعہ پنجائیت 03-07-18طالبہ کو پیش کر دیا۔ بعد ازاں اغواء کے بعد زیادتی کا نشانہ بننے والی طالبہ نے بتایا کہ ملزمان اسے نا صرف زیادتی کا نشانہ بناتے رہے بلکہ زبان کھولنے کے خوف سے اس کی برہنہ تصاویر بھی بناتے رہے اور ساتھ باور کراتے رہے کہ اگر زبان کھولی تو برہنہ تصاویر کو تحصیل پیر محل میں پھیلا دیا جائے گا۔

طالبہ کے مطابق کچھ عرصہ بعد اس کی شادی انگلینڈ طے تھی، ملزمان نے منگنی کا لاکٹ سیٹ ، قومی شناختی کارڈ اور پریکٹیکل بک بھی چھین لی جبکہ مورخہ 05-07-18کو مرکزی ملزم اللہ دتہ نے دو ماہ پہلے کا ایک جعلی نکاح نامہ تیار کر کے (م) کی برآمدگی کی بابت رٹ پٹیشن دائر کر دی۔ مورخہ 06-07-18کرتے ہوئے کارروائی کا آغاز کر دیا۔ مقدمہ کے تفتیشی آفیسر شوکت علی جاوید کا کہنا تھا کہ واقعہ انتہائی افسوسناک ہے ملزمان کسی رعائیت کے مستحق نہیں۔ تفیش میں انصاف کے تمام تقاضے پورے کئے جائیں گے اور بہت جلد ملزمان کو گرفتار کر کے پابند سلاسل کر دیا جائے گا۔

مزیدخبریں