دوہری شہریت کے حامل وزراء کی حب الوطنی مشکوک ہے،جاوید قصوری

  دوہری شہریت کے حامل وزراء کی حب الوطنی مشکوک ہے،جاوید قصوری

  

لاہور (پ ر)امیرجماعت اسلامی صوبہ وسطی پنجاب و صدر ملی یکجہتی کونسل پنجاب وسطی محمد جاوید قصوری نے کہاہے کہ دوہری شہریت کے حامل وزراء کی حب الوطنی شکوک و شبہات سے مکمل طور پر پاک نہیں ہوسکتی۔ ایسے لوگوں کا اعلیٰ عہدوں پر فائز رہنا سیکورٹی رسک ہے۔ وزیر اعظم نے قوم سے وعدہ کیا تھا کہ وہ محب وطن لوگوں کو آگے لائیں گے۔ ان کی کابینہ میں شامل دوہری شہریت کے حامل افراد اس وعدے کی نفی ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز منصورہ میں اہم اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان تاریخ کے نازک ترین دور سے گزر رہا ہے۔ مہنگائی، بے روزگاری، لاقانونیت اور کرپشن بڑے مسائل ہیں۔ ایک کروڑ نوکریاں اور پچاس لاکھ گھر دینے والوں نے عوام کے منہ سے روٹی کا آخری نوالہ بھی چھین لیا ہے۔ جس انداز میں کرونا کی صورتحال سے نمٹا گیا اس سے بھی حکمرانوں کی نااہلی کھل کر سامنے آچکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت 23ماہ گزر جانے کے باوجود کسی قسم کی کوئی نئی تجارتی پالیسی متعارف نہیں کرواسکی۔ حکمرانوں کے سارے کام محض ڈنگ ٹپاؤ تک محدود ہیں۔ قرضوں میں 10ہزار ارب روپے کا اضافہ ہوگیا ہے۔ آٹا، چینی اور پٹرول مافیا نے اربوں، کھربوں روپے کمائے مگر کوئی پوچھنے والا نہیں ہے۔ محمد جاوید قصوری نے اس حوالے سے مزید کہا کہ کشمیر پالیسی پر حکمرانوں کا رویہ بزدلانہ ہے۔ مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کو ختم اور11ماہ سے وادی میں کرفیو لگا کر بھارتی سرکار نے مظالم کی انتہا کردی ہے۔ 25سو سے زائد غیر کشمیریوں کو مقبوضہ وادی کا ڈومیسائل جاری کردیا گیا ہے۔ بھارت حکومت مسلم اکثریت کو اقلیت میں بدلنے کی کوشش کررہی ہے۔ مگر بد قسمتی سے حکومت پاکستان کی کشمیر پالیسی دنیا کی منت سماجت سے آگے نہیں بڑھ رہی۔ کشمیر پاکستان کی شہ رگ ہے اور اس کا دفاع کرنا پاکستان کا آئینی و قانون حق اور اخلاقی ذمہ داری بنتی ہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -