پی ٹی ڈی سی نے ملازمین کی بر طرفی کے بعد نئی بھرتی کااشتہار دیدیا

پی ٹی ڈی سی نے ملازمین کی بر طرفی کے بعد نئی بھرتی کااشتہار دیدیا

  

راولپنڈی(این این آئی) پاکستان ٹورازم ڈیویلپمنٹ کارپوریشن(پی ٹی ڈی سی)ہیڈ آفس اور سیاحتی معلوماتی مراکز کے ملازمین کوتنظیم نو کے نام پر 07جولائی 2020 کو مستقل ملازمتوں سے جبری طور پر فارغ کر دیا گیا۔ ابھی پی ٹی ڈی سی ملازمین کا ملازمتوں سے غیر قانونی برطرفی پر ملک گیر احتجاج جاری ہی تھا کہ پی ٹی ڈی سی کی انتظامیہ نے پرانے ملازمین کی جگہ نئے ملازم بھرتی کرنے کیلئے اخبار اشتہار شائع کر دیا۔ اسلام آباد ہائی کورٹ نے پی ٹی ڈی سی کے بر طرف ملازمین کے خلاف کیے گئے اقدام پروفاق سے 22 جولائی کو جواب طلب کر لیاہے۔ یونین نمائندگان نے کہا ہے کہ ہم 25 سے30 سال ملازمت مکمل کرنیوالے ملازمین ہیں اور زندگی کا بڑا حصہ اس ادارے کیلئے کام کیا ہے، وزیر اعظم پاکستان سے مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں فوراََواپس ملازمتوں پر بحال کیا جائے۔ یہ سب اقدامات وزیر اعظم کے اعلان اور پالیسی کے خلاف ہیں۔ پی ٹی ڈی سی یونین کے نمائندگان نے کہا کہ وزیر مملکت برائے پارلیمانی اُمورعلی محمد خان نے قومی اسمبلی کے فلور پر کھڑے ہو کر جھوٹ بولا کہ ہم ان ملازمین کو گولڈن ہینڈ شیک دے کر فارغ کیا ہے جبکہ حقیقت میں ہمیں کوئی پیکج یا رقم نہیں دی گئی۔ یہ سب جھوٹ پر مبنی من گھڑت باتیں ہے۔ برطرفیوں کے نوٹیفیکیشن پرصاف لکھا ہے کہ محکمہ آپ کو COVID-19 کے باعث ہونے وا لے مالی خسارے اور ادارے میں تنظیم ِ نوکے باعث ملازمت سے برطرف کررہا ہے۔

پی ٹی ڈی سی

مزید :

صفحہ آخر -