ادویات کی قیمتوں میں اضافہ نہیں کیا، ترجمان

ادویات کی قیمتوں میں اضافہ نہیں کیا، ترجمان

  

اسلام آباد (این این آئی)ترجمان وزارت قومی صحت نے کہا ہے کہ وفاقی حکومت نے ادویات کی قیمتوں میں کوئی فوری اضافہ نہیں کیا ہے۔ اتوار کو ترجمان وزارت قومی صحت نے کہا کہ ڈرگ پرائسنگ پالیسی 2018 ء کے تحت ادویہ سازکمپنیوں کو یہ اختیار حاصل تھا کہ وہ حکومتی مداخلت کے بغیر ادویات کی قیمتوں میں خودساختہ سالانہ 7 سے 10 فیصد تک اضافہ کر سکتی ہیں۔ ڈرگ ایکٹ 1976 پر مکمل عملدرآمد کرنے میں حائل بعض آئینی پیچیدگیوں کو ختم کر نے کے لئے وفاقی حکومت نے ڈرگ پرائسنگ پالیسی 2018 ء میں ترامیم کی ہیں۔ترمیم شدہ ڈرگ پرائسنگ پالیسی 2018 ء میں شامل ایک شق کے تحت وفاقی حکومت ادویہ ساز کمپنیوں کی جانب سے کسی بھی کیٹگری کی دوائی کی قیمت میں اضافہ کو ختم کر سکتی ہے یا روک سکتی ہے۔ترجمان وزارت قومی صحت کے مطابق وفاقی حکومت نے ڈرگ پرائسنگ پالیسی 2018 ء میں جو تبدیلیاں کی ہیں ڈریپ نے اس کا باقاعدہ نوٹیفکیشن حال ہی میں جاری کیا ہے۔لہٰذا حکومت نے زندگی بچانے والی ادویات کی قیمتوں میں اضافہ کی کوئی منظوری نہیں دی۔یہ تمام حکومتی اقدامات ادویہ ساز کمپنیوں کی حکومت کو دی جانے والی اس یقین دہانی کے تناظر میں اٹھائے گئے تھے کہ وہ کم از کم ستمبر2020 ء تک ادویات کی قیمتوں میں سالانہ اضافہ نہیں کریں گی۔ادویہ ساز کمپنیوں نے حکومت کو دی جانے والی یقین دہانی کی پاسداری نہیں کی۔ایک سو ا دویہ ساز کمپنیوں نے ادویات کی قیمتوں میں اضافہ کی درخواست کر دی ہے۔ ادویہ ساز کمپنیوں کی وعدہ خلافی کے نتیجے میں اور ملک میں کورونا کی بیماری کے باعث عوام کے مفاد کو تحفظ دینا حکومت کے فرائض میں شامل ہے لہٰذا حکومت کو اختیار ہے کہ وہ مداخلت کر کے کسی ایک یا تمام ادویات کی قیمتوں کو منجمندکردے۔

ترجمان کی وضاحت

مزید :

صفحہ اول -