موجودہ پالیسی کے تحت 700سال بھی لگے رہیں، مسلہ کشمیر حل نہیں ہو سکتا: راجہ فاروق حیدر

  موجودہ پالیسی کے تحت 700سال بھی لگے رہیں، مسلہ کشمیر حل نہیں ہو سکتا: راجہ ...

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) وزیراعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر نے کہا ہے کہ کشمیری ریاست کا پاکستان سے الحاق ضروری ہے۔کل جماعتی حریت کانفرنس کے زیر اہتمام یوم قرارداد الحاق پاکستان کانفرنس سے وزیراعظم آزاد کشمیر راجا فاروق حیدر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ قرارداد میں لکھا ہے کہ کشمیریوں کو اپنے نمائندے منتخب کرنے کا حق ہونا چاہیے۔ کشمیر کی عوام کا پاکستان کے ساتھ مذہبی اور ثقافتی الحاق ہے، لیکن موجودہ پالیسی کے مطابق آپ 700 سال بھی لگے رہیں تو بھی مسئلہ کشمیر حل نہیں ہو سکتا۔ ہمیں دنیا میں انصاف کے اداروں کے پاس جانا پڑے گا، جغرافیائی لسانی اور مذہبی اعتبار سے ریاست جموں و کشمیر پاکستان کا جزو ہے۔ 19جولائی 1947 کی قرارداد کو ریاست بھر کے عوام کی تائید حاصل تھی،کشمیریوں نے اپنا فرض ادا کر دیا، اب پاکستان کی ذمہ داری ہے۔انہوں نے کہا کہ آزادکشمیر حکومت اور حریت کانفرنس کو اپنا مقدمہ پیش کرنے کی اجازت دی جائے، حکومت پاکستان کو تجاویز ارسال کر دی ہیں کہ کس طرح آگے بڑھا جاسکتا ہے۔ بھارت کے انسانیت کے خلاف جرائم پر دنیا بھر کے ممالک میں کیس کریں گے، پاکستان کے عوام اور سیاسی قیادت کو آپس میں مل کر کشمیر پرکام کرنا ہوگا۔

راجہ فاروق حیدر

اسلام آباد(این این آئی)وزیراعظم آزادکشمیر راجہ فاروق حیدر خان نے مولانا فضل الرحمان سے ان کی رہائش گاہ پر ملاقات کی جسمیں دونوں رہنماؤں نے مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پر انتہائی تشویش کا اظہار کیا۔دونوں رہنماؤں نے لائن آف کنٹرول پر ہندوستانی فوج کی جانب سے نہتے معصوم لوگوں پر فائرنگ کی شدید مذمت کی۔ وزیر اعظم آزاد کشمیر نے کہاکہ کشمیریوں نے قیام پاکستان سے قبل ہی فیصلہ کرلیا تھا کہ ان کی منزل پاکستان ہے۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان میں شامل ہونے کے لیے کشمیری عوام نے قربانیوں کی لازوال داستانیں رقم کی ہیں۔ راجہ فاروق حیدر خان نے کہا کہ ہماری جدوجہد اس وقت تک جاری رہیگی جب تک آخری ہندوستانی فوجی ریاست جموں و کشمیر سے نکل نہیں جاتا۔

ملاقات

مزید :

صفحہ اول -