شوگر انکوائری کمیشن کیخلاف انٹراکورٹ اپیل پر سماعت،وکیل شوگر ملز کی دوبارہ کمیشن بنانے اور انکوائری کی درخواست

شوگر انکوائری کمیشن کیخلاف انٹراکورٹ اپیل پر سماعت،وکیل شوگر ملز کی دوبارہ ...
شوگر انکوائری کمیشن کیخلاف انٹراکورٹ اپیل پر سماعت،وکیل شوگر ملز کی دوبارہ کمیشن بنانے اور انکوائری کی درخواست

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)اسلام آبادہائیکورٹ میں شوگر انکوائری کمیشن کیخلاف انٹراکورٹ اپیل کی سماعت کے دوران وکیل شوگر ملز نے دوبارہ کمیشن بنانے اور انکوائری کی درخواست کردی۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق اسلام آبادہائیکورٹ میں شوگرانکوائری کمیشن کیخلاف انٹراکورٹ اپیل پر سماعت ہوئی،وکیل شوگر ملز مخدوم علی خان نے دلائل دیتے ہوئے کہاکہ حکومت نے فیصلہ کیاہے کہ انکوائری کمیشن بنایاجائے ،حکومت نے شوگرانکوائری کیلئے کمیشن بنایا،نوٹی فکیشن گزٹ میں شائع ہونے تک کمیشن کی کوئی حیثیت نہیں تھی،سنگل بنچ کو بتایا تھا کہ 16 مارچ والے نوٹی فکیشن میں کمیشن کے 6 ممبران تھے، ہمیں ہرباریہ ہی کہا جاتا رہا کہ نوٹی فکیشن آپ کیلئے دستیاب نہیں ہے۔

وکیل شوگر ملزنے کہاکہ جب نوٹی فکیشن عوام کیلئے دستیاب نہ ہو تو اس کی حیثیت نہیں ہوتی ،سپریم کورٹ کے وضع کردہ قانون کے مطابق اس کمیشن کی حیثیت ہی نہیں تھی۔مخدوم علی خان کی جانب سے بھارتی عدالتی فیصلوں کے حوالے بھی دیئے گئے ،وکیل شوگر ملز نے کہاکہ ہم پرنٹنگ کارپوریشن جا کرانکوائری کمیشن کی تشکیل کا نوٹی فکیشن مانگتے رہے،جب کمیشن کی رپورٹ آئی تو اس پر سات ممبران کے دستخط تھے، 1 رکنی بنچ نے ہمارا اعتراض اس بنیاد پر مسترد کیا کہ کمیشن خالی نشست پرکبھی بھی نیا رکن رکھ سکتا ہے،یہ خالی نشست کا کیس نہیں تھا ، یہاں ایک نیا رکن7ویں ممبرکے طور پر شامل کیا گیا ۔

مخدوم علی خان نے کہاکہ انکوائری کمیشن کی تشکیل ہونے کے بعد حکومت خود اس میں تبدیلی نہیں کر سکتی،انکوائری کمیشن کے پاس تقریباً تمام جوڈیشل اختیارات موجود تھے،کمیشن کے پاس کسی کو طلب کرنے، کہیں بھی تلاشی لینے کے اختیارات تھے ، انکوائری کمیشن کے پاس اختیارات جوڈیشل ہوں تو اس پر اصول بھی وہی لاگو ہونگے۔

جسٹس عامر فاروق نے استفسار کیاکہ کیا آپ کہناچاہتے ہیں حکومت کمیشن دوبارہ بنائے؟،وکیل مخدوم علی خان نے کہاکہ حکومت دوبارہ کمیشن بنائے اورانکوائری کرے،جسٹس عامر فاروق نے استفسار کیا کہ کمیشن اٹانومس باڈی ہو گی،ان کے پاس انکوائری کے اختیارات ہونگے؟،وکیل مخدوم علی خان نے کہاکہ جی بالکل کمیشن اٹانومس ہونا چاہئے،شوگر ملز کے بارے میں بہت ساری باتیں کی گئیں، کچھ مخصوص کمپنیوں کے حوالے سے انکوائری کی گئی ۔

جسٹس عامر فاروق نے استفسار کیاکہ کسی کیخلاف ذاتی طور پر فائنڈنگ آجاتی ہے تو اس سے متاثر ہو سکتے ہیں؟وکیل شوگر ملز کمپنیزنے کہاکہ سپریم کورٹ کے کرکٹر سلیم ملک کیس میں واضح احکامات ہیں ۔

مزید :

قومی -علاقائی -اسلام آباد -