انجری سے چھٹکارا پانے میں کس نے مدد کی؟ نسیم شاہ کا انکشاف ہر آنکھ نم کر دے گا

انجری سے چھٹکارا پانے میں کس نے مدد کی؟ نسیم شاہ کا انکشاف ہر آنکھ نم کر دے گا
انجری سے چھٹکارا پانے میں کس نے مدد کی؟ نسیم شاہ کا انکشاف ہر آنکھ نم کر دے گا

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) قومی کرکٹ ٹیم کے نوجوان فاسٹ باﺅلر نسیم شاہ نے انکشاف کیا ہے کہ وہ مرحومہ والدہ کی وجہ سے انجری سے چھٹکارا پانے میں کامیاب ہوئے اور انٹرنیشنل کرکٹ کھیلنے لگے۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان کی جانب سے 4 ٹیسٹ میچز کھیلنے والے دائیں ہاتھ کے فاسٹ باﺅلر نسیم شاہ 2 برس قبل کمر کی تکلیف کاشکار ہو ئے تھے اور ان کا کیریئر وقت سے قبل ہی خدشات کا شکار ہونے لگا تھا ۔ وہ ناصرف پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) نہ کھیل سکے بلکہ ایمرجنگ ایشیاءکپ کا بھی حصہ نہیں بن سکے تھے لیکن پھر نسیم شاہ نے انجری سے نجات پائی اور انڈر 19 ٹیم کا حصہ بنے جس کے بعد پھر ٹیسٹ کرکٹر بن گئے اور پی ایس ایل 5 کھیلنے میں بھی کامیاب ہو گئے۔

انہوں نے نجی خبر رساں ادارے سے گفتگو کرتے ہوئے انجری سے نجات پانے اور کرکٹ میں واپسی کا سارا کریڈٹ اپنی والدہ کو دیتے ہوئے کہا کہ میری والدہ نے مجھے بڑی ہمت دلائی۔ مجھے یاد ہے کہ میری والدہ کو کرکٹ کا کچھ علم نہیں تھا، بس وہ یہ جانتی تھیں کہ میں بیمار ہوں اور کھیل نہیں سکتا، اس کے علاوہ انہیں کچھ علم نہیں تھا جبکہ وہ جانتی تھیں کہ میں پریشان ہوں۔ وہ کہا کرتی تھیں کہ کبھی ہمت نہ ہارنا، اللہ پر یقین رکھنا، دل سے محنت کرنا نیت صاف رکھنا کامیابی ضرور قدم چومے گی۔

فاسٹ باﺅلر کا کہنا تھا کہ میری امی نے مجھے بہت متحرک کیا اور میرا اپنے اوپر یقین مزید بڑھا جس کا سارا کریڈٹ والدہ کو جاتا ہے، اس دوران میں نے انجری سے چھٹکارا پایا اور اب کھیل رہا ہوں۔ نسیم شاہ نے کہا کہ پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) اور نیشنل کرکٹ اکیڈمی کے سٹاف نے بھی بہت محنت کی، جب میں انجری کا شکار ہوا تو میری عمر بھی بہت کم تھی، بہت پریشان تھا، کرکٹ میرے خون میں رچ بس چکی تھی لیکن میں کھیل نہیں پا رہا تھا اور طرح طرح کے خیالات آ رہے تھے۔

مزید :

کھیل -