لاہور کے ترقیاتی بجٹ میں کمی، پیرس بنانے کا خواب ادھورا رہ گیا

لاہور کے ترقیاتی بجٹ میں کمی، پیرس بنانے کا خواب ادھورا رہ گیا

  

                                  لاہور(صبغت اللہ چودھری)پنجاب حکومت نے لاہور کو پیرس بنانے کا خواب فی الحال ترک کر دیا ہے آئندہ مالی سال میں330 ارب روپے کے سالانہ ترقیاتی بجٹ میں صوبائی دارالحکومت کے حصے صرف 21 ارب روپے آئیں گے جو مجموعی ڈویلپمنٹ بجٹ کا صرف 6.36 فیصد ہے،پنجاب حکومت نے پہلی مرتبہ ترجیحات میں تبدیلی کرکے لاہور کے ترقیاتی فنڈز میں گزشتہ ادوار کے مقابلے میں ریکارڈ کمی کی ہے،آئندہ مالی سال 2014-15 ءکیلئے راولپنڈی اور جنوبی پنجاب حکومت کی اہم ترجیحات میں شامل ہیں اور ان علاقوں کیلئے ریکارڈ فنڈز مختص کئے گئے ہیںجبکہ ملتان اور بہاولپور میں اربوں مالیت کے نئے پراجیکٹس شروع کئے جارہے ہیںخادم اعلیٰ کے مختلف ادوار کے پیش کئے گئے کسی بھی بجٹ میں صوبائی دارالحکومت کیلئے اتنی کم رقم مختص کی گئی ہے۔ پنجاب حکومت کی بجٹ دستاویزات کے مطابق آئندہ مالی سال 2014-15کیلئے صوبائی دارالحکومت کیلئے مختلف سیکٹرز کے جاری و نئے منصوبوں میں پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ بورڈ کے ترقیاتی پراجیکٹس کیلئے 65کروڑ 7لاکھ روپے، اربن ڈویلپمنٹ کیلئے 7ارب79کروڑ روپے، ہیلتھ اینڈ فیملی پلاننگ کیلئے4ارب9کروڑ 40لاکھ روپے، پاپولیشن ویلفیئر 43کروڑ روپے، اوقاف و مذہبی امور 5کروڑ روپے، آرکیالوجی 17کروڑ 80لاکھ روپے، انفارمیشن اینڈ کلچر 42کروڑ 30لاکھ روپے، تحفظ ماحول 2کروڑ 50لاکھ روپے ، ایمرجنسی سروسز کیلئے 45کروڑ 30لاکھ روپے، ٹرانسپورٹ 3کروڑ 90لاکھ روپے، لیبر اینڈ ہیومن ریسورس 5کروڑ 22لاکھ روپے، انفارمیشن ٹیکنالوجی 82کروڑ 20لاکھ روپے، ٹور ازم 20کروڑ روپے، معدنیات و کان کنی 4کروڑ روپے، انڈسٹریز 1کروڑ 80لاکھ روپے، لائیو سٹاک 6کروڑ روپے، خوراک 8کروڑ روپے، فشریز 1کروڑ 50لاکھ روپے، پبلک بلڈنگز 1ارب41کروڑ 50لاکھ روپے، آبپاشی 12کروڑ 50لاکھ روپے، روڈ سیکٹر 2ارب29کروڑ 50لاکھ روپے، وائلڈ لائف 32کروڑ روپے، جنگلات 14کروڑ 50لاکھ روپے، زراعت 50لاکھ روپے، سوشل پروٹیکشن 2کروڑ روپے، سپورٹس 33کروڑ 20لاکھ روپے، لٹریسی 7کروڑ 50لاکھ روپے، سپیشل ایجوکیشن 2کروڑ 10لاکھ روپے، ہائر ایجوکیشن 28کروڑ 70لاکھ روپے، سکولز ایجوکیشن 3کروڑ 50لاکھ روپے مختص کئے گئے ہیں صوبائی دارالحکومت ماس ٹرانزٹ کی اورنج لائن کیلئے ابتدائی طور پر 20کروڑ روپے رکھے گئے ہیں جو آئندہ مالی سالی کے دوران صوبائی دارالحکومت کا سب سے بڑا اور اہم منصوبہ ہے لاہور میٹرو بس کیلئے 1ارب 62کروڑ روپے رکھے گئے ہیں۔ آئندہ مالی سال کے دوران ملتان اور راولپنڈی کیلئے ریکارڈ فنڈز مختص کئے گئے ہیں ۔ راولپنڈی کے صرف ایک پراجیکٹ راولپنڈی اسلام آباد میٹرو بس سروس کیلئے 11ارب روپے مختص کئے گئے ہیں جن میں راولپنڈی اسلام آباد میٹرو بس سروس پراجیکٹ پیکیج ون کیلئے 3ارب3کروڑ 66لاکھ روپے، پیکیج تھری کیلئے2ارب65کروڑ 4لاکھ روپے، پیکیج ٹو 3ارب7کروڑ روپے، راولپنڈی میٹرو بس کیلئے پلیٹ فارم اور دیگر تعمیرات کیلئے 1ارب52کروڑ روپے مختص کئے گئے ہیں۔ ملتان میٹرو بس منصوبے کیلئے 10ارب روپے مختص کئے گئے ہیں۔ ایک سینئر افسر نے بتایا کہ پنجاب حکومت نے پہلی مرتبہ ترجیحات میں تبدیلی کی ہے لاہور کیلئے آئندہ مالی سال کے دوران گزشتہ ادوار کے مقابلے میں بہت کم فنڈز مختص کئے گئے ہیں راولپنڈی اور جنوبی پنجاب حکومت کی اہم ترجیحات میں شامل ہیں اور ان علاقوں کیلئے ریکارڈ فنڈز مختص کئے گئے ہیں ملتان اور بہاولپور میں اربوں مالیت کے نئے پراجیکٹس شروع کئے جارہے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ گزشتہ 6سال کے دوران لاہور میں بہت زیادہ فنڈز خرچ ہوئے ہیں جس سے دوسرے علاقوں کے منصوبے متاثر ہوئے ہیں جس کی وجہ سے لاہور کیلئے ترقیاتی فنڈز میں کمی کی گئی ہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -