شمالی وزیرستان آپریشن کے متاثرین کی ہر ممکن مدد کر رہے ہیں،حافظ سعید

شمالی وزیرستان آپریشن کے متاثرین کی ہر ممکن مدد کر رہے ہیں،حافظ سعید

  

                 منچن آباد(تحصیل رپورٹر)امیر جماعةالدعوة پاکستان پروفیسر حافظ محمد سعید نے کہا ہے کہ جماعةالدعوة کے رضاکار شمالی وزیرستان آپریشن کے دوران نقل مکانی کرنے والے متاثرین کی ہر ممکن مدد جاری رکھے ہوئے ہیں۔ بنوں اور ڈیرہ اسمٰعیل خاں میں ریلیف کیمپ قائم کر کے متاثرین میں پکی پکائی خوراک اورانہیں طبی سہولیات فراہم کی جارہی ہیں۔ ملک سے بھارت و امریکہ کی مداخلت ختم اور اتحادویکجہتی کا ماحول پیدا کرنا انتہائی ضروری ہے۔ مذہبی و سیاسی جماعتیں ایک پلیٹ فارم پر جمع ہو کر دفاع پاکستان کی جدوجہد میں بھرپور کردار ادا کریں ۔ وہ مقامی شادی ہال میں جماعةالدعوة کے زیر اہتمام کارکنان کی تربیتی نشست سے خطاب کر رہے تھے۔ اس موقع پر جماعةالدعوة کے مرکزی رہنما مولانا سیف اللہ خالد، مولانا نصر جاوید ودیگر نے بھی خطاب کیا۔ جماعةالدعوة کے امیر حافظ محمد سعید نے اپنے خطاب میں کہاکہ حکومت اور طالبان کے مابین مذاکرات کی ناکامی کے بعد آپریشن کا ہمیں شدید دکھ اور افسوس ہے۔ ہمارا موقف بالکل واضح ہے کہ شمالی وزیرستان میں آپریشن کا دائرہ ملک دشمنوں تک محدود رکھاجائے۔وہ محب وطن قبائلی جو شروع دن سے پاکستان کی سلامتی واستحکام کی جنگ لڑتے رہے اور دفاع پاکستان کی جدوجہد میں ہمیشہ ہراول دستہ کا کردار ادا کیا ہے ان کی ہر قسم کی ضروریات اور زندگیوںکے تحفظ کا مکمل بندوبست ہوناچاہیے۔انہوںنے کہاکہ شمالی وزیرستان آپریشن صرف ان عناصر کے خلاف ہونا چاہیے جو بھارت و امریکہ کے اشاروں پروطن عزیز پاکستان میں دہشت گردی کی آگ بھڑکا رہے ہیں۔ جماعةالدعوة نے سوات آپریشن کے دوران متاثرہ بھائیوں کو خوراک اور علاج معالجہ کی سہولیات فراہم کیں اور اب بھی ان شاءاللہ شمالی وزیرستان آپریشن کے باعث نقل مکانی کرنے والے اپنے بھائیوں کی ہرممکن مدد کریں گے۔حافظ محمد سعید نے کہاکہ قبائلی پاکستان سے محبت کرنے والے اور اس کے محافظ ہیں‘ وہ بیرونی اشاروں پر پاکستان کو میدان جنگ بنانے والوں کے ساتھ نہیں ہیں۔ آپریشن کے دوران پرامن قبائلیوں کے جان ومال کو کسی صورت نقصان نہیں پہنچنا چاہیے۔ امریکہ اور اس کے اتحادی افغانستان میںلڑی جانے والی جنگ پاکستان منتقل کرنا چاہتے ہیں۔ پاکستان میں فرقہ وارانہ قتل و غارت گری اور دہشت گردی کی آگ بھڑکا کر مسلمانوں کو آپس میں لڑانے کی کوششیں کی جارہی ہیں۔بیرونی قوتیںملک میں جس جنگ کو بھڑکانا چاہتی ہیں ہم نے اسے بجھانے کیلئے اپنا کردار ادا کرنا ہے۔ مسلمان کیلئے کسی دوسرے مسلمان کو نشانہ بنانا جائز نہیں ہے۔ آپس کے لڑائی جھگڑے اور تشدد کو ختم کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوںنے کہاکہ جماعةالدعوة شروع دن سے طالبان سے مذاکرات کی حامی رہی ہے۔ہم نے دفاع پاکستان کونسل کے پلیٹ فارم سے چلائی جانے والی ملک گیر تحریک کے دوران بھی ہمیشہ یہی موقف اختیار کیا تاہم کراچی ایئرپورٹ اور سکیورٹی فورسز پر بار بار ہونے والے حملوں اور قومی املاک کو بے پناہ نقصان پہنچائے جانے کے بعد بھارت و امریکہ کے اشاروں پر کام کرنے والوں نے معاملہ اس انتہا تک پہنچا دیا۔

حافظ سعید

مزید :

علاقائی -