سر براہ امن لشکر کے حجرے پرخودکش حملہ،ابتدائی رپورٹ تیار

سر براہ امن لشکر کے حجرے پرخودکش حملہ،ابتدائی رپورٹ تیار
سر براہ امن لشکر کے حجرے پرخودکش حملہ،ابتدائی رپورٹ تیار

  

پشاور (مانیٹرنگ ڈیسک )صوبا ئی دارلحکومت میں جمعرات کی رات امن کمیٹی کے سربراہ کی رہائش پر ہونے والے خود کش حملے کی ابتدائی رپورٹ تیار کرلی گئی ہے تاہم پولیس کا کہنا ہے کہ خود کش حملہ آور کا سر نہیں مل سکا۔تفصیلات کے مطابق نواحی علاقے متنی میں امن لشکر کے رہنما کے حجرے کے باہر ہونے والے خود کش حملے کی ابتدائی رپورٹ پولیس نے تیار کرلی، رپورٹ کے مطابق خود کش حملہ آور کی عمر 28 سے 30 سال کے درمیان تھی، خود کش حملہ آور کا ہدف امن لشکر کے رہنما تھے۔پولیس نے ابتدائی رپورٹ میں مزیدکہا ہے کہ خود کش حملہ آور نے دھماکے میں دستی بم بھی استعمال کیا ، خود کش حملہ آور کے دیگر جسمانی اعضا موقع سے مل گئے مگر سر نہ مل سکا۔واضح رہے کہ گزشتہ رات ہونے والے خود کش حملے میں ایک شخص جاں بحق، جب کہ متعدد افراد زخمی ہوئے، خود کش حملہ آور نے خود کو حجرے کے باہر دھماکے سے اڑا لیا تھا، اس سے قبل بھی اسی مقام پر دھماکے میں امن لشکر کے سابق سربراہ دلاور خان جاں بحق ہوئے تھے۔

مزید :

پشاور -