سائنسدانوں نے ملیریا کے خلاف ایک انوکھا ہتھیار تیار کرلیا

سائنسدانوں نے ملیریا کے خلاف ایک انوکھا ہتھیار تیار کرلیا
سائنسدانوں نے ملیریا کے خلاف ایک انوکھا ہتھیار تیار کرلیا

  

برلن(مانیٹرنگ ڈیسک) سائنسدانوں نے ملیریا کے خلاف ایک نیا ہتھیار تیار کرلیا ہے اور یہ ہتھیار جنیاتی طور پر تبدیل شدہ مچھر ہیں جو اپنی نسل میں زیادہ تر نر مچھر ہی پیدا کریں گے اور نتیجتاً بتدریج انکی نسل ہی ختم ہوجائے گی۔ تحقیقی جریدے نیچر کمیونیکیشن میں شائع ہونیوالی رپورٹ میں جرمن ماہرین نے کہا کہ سکین یا صنف منتخب کرنے کی اس نئی تکنیک کے ذریعے نئے پیداہونیوالے مچھروں میں سے 95فیصد تک نر مچھر ہوں گے۔ عام طور پر نر مچھروں کی شرح 50فیصد ہوتی ہے اور نئے طریقہ کار کو اختیار کرنے سے مچھروں کی آبادی میں مادہ مچھروں کی تعداد بہت ہی کم ہوجائے گی اور جس کا نتیجہ ان مچھروں کی آبادی میں بتدریج کمی اور آخر کارنامے کا خاتمے کی صورت میں نکلے گا۔ ملیریا کا جر ثومہ ایک انسان سے دوسرے انسان تک منتقل کرنے والے مچھروں کے خاتمے کی وجہ سے اس بیماری کا پھیلا ﺅبھی رک جائے گا۔ نیا طریقہ کار اینو فیلس گیمبائی نامی مچھروں پر چھ سالہ تحقیق کے بعد دریافت کیا گیا۔

مزید :

تعلیم و صحت -