پاکستانی طلباءنے سولر پاور ڈرون طیارہ تیار کرلیا

پاکستانی طلباءنے سولر پاور ڈرون طیارہ تیار کرلیا
پاکستانی طلباءنے سولر پاور ڈرون طیارہ تیار کرلیا

  

راولپنڈی (مانیٹرنگ ڈیسک) غلام اسحاق خان انسٹی ٹیوٹ کے امریکن انسٹی ٹیوٹ آف ایروناٹکس اینڈ آسٹروناٹکس کے زیر اہتمام منعقد ہونے والے ڈی بی ایف سی مقابلوں میں شمسی توانائی پر کام کرنے والی معتبر پاکستانی کمپنی ٹیسلاTesla کی فنی معاونت سے ایئر یونیورسٹی کے طلباءنے سولر پاور سے بغیر پائلٹ کے اڑنے والے پہلے پاکستانی جہاز یو اے وی کی اڑان کا کامیاب تجربہ کرلیا اور مقابلہ بھی اپنے نام کرلیا۔سولر پاور پر بغیر کسی پائلٹ کے اڑائے جانے والے اس ڈرون کی تیاری میں سب سے بڑا چیلنج ڈرون کے پروں میں سولر سیلوں کو اکٹھا کرنا تھا اور اس مشکل ترین کام کے پیش نظر پورے پاکستان سے اس مقابلے کےلئے صرف چار ٹیموں کا انتخاب کیا گیا تھا۔ اب تک پاکستان میں جتنے بھی مقابلے ہوئے ہیں ان میں یہ سولر پاور سے چلنے والا پہلا کامیاب ڈرون ہے۔ یہ جہاز فضائی نگرانی کے عمل کو کرچ طویل اور قابل اعتماد بنانے میں اہم کردار ادا کریں گے۔ یہ مقابلہ جیتنے والی ایئر یونیورسٹی کے طلباءکی ٹیم میں عبدالللہ طارق، اسامی گیلانی عبداللہ محمود اور غلام جہانیاں کا تعلق شعبہ الیکٹریکل انجینئرنگ اور یاسر علی کا تعلق شعبہ مکینیکل اینڈ ایروسپیس انجینئرنگ سے ہے ۔ ٹیم کے کام کی نگرانی یونیورسٹی کے شعبہ الیکٹریکل انجینئرنگ کے انجینئر سہیل خالد اور انسٹی ٹیوٹ آف اویونگ اینڈ ایروناٹکس کے ڈاکٹر ابراہیم حنیف نے کی۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -