چاہتے تو پورے ملک میں آگ لگا دیتے لیکن ہمارا انتقام صرف انقلاب ہے:طاہر القادری

چاہتے تو پورے ملک میں آگ لگا دیتے لیکن ہمارا انتقام صرف انقلاب ہے:طاہر ...
چاہتے تو پورے ملک میں آگ لگا دیتے لیکن ہمارا انتقام صرف انقلاب ہے:طاہر القادری

  

 لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان عوامی تحریک اور منہاج القرآن کے سربراہ طاہرالقادری نے کہا ہے کہ چاہتے تو ماڈل ٹاﺅن سانحے کے بعد پورے ملک میں آگ لگا دیتے لیکن ہمارا انتقام صرف انقلاب ہے۔ کارکنوں سے ویڈیولنک کے ذریعے خطاب میں ان کا کہنا تھا کہ واقعے کے بعد کارکن مشتعل ہو جاتے تو جگہ جگہ احتجاج اور مظاہرے ہوتے لیکن کارکنان کو بتایا گیا کہ ہمارا انتقام انقلاب ہو گا۔حکمران لوگوں کو گمراہ کر رہے ہیں کہ ہمارا انقلاب یا احتجاج غیر آئینی ہے،غربت کے خاتمے کا نام انقلاب ہے ،اقتدار کی منتقلی عوام تک کرنے کا نام انقلاب ہے ،کیا یہ سب غیر آئینی ہے ہم نے احتجاج کے لئے ہر جمہوری طریقہ اختیار کیا،حکمرانوں کی باتیں سنیں ،ان کی شکلیں دیکھیں۔ حکمران بوکھلا کر بھونڈے ہتھکنڈوں پر اتر آئے ہیں، خود اسلحہ خرید کر ہم پر اسلحہ بر آمد کرنے کا الزام لگانا چاہتے ہیں،اسلحہ بر آمد ہو اتھا تو اسی وقت دکھاتے۔سانحہ ماڈل ٹاﺅن میں 14افراد شہید ہو چکے،100افراد اب بھی زندگی اور موت کی کشمکش میں مبتلا ہیں،کئی لاپتہ ہیں،کئی لاشیں غائب کر دی گئیں،چاہتے ہیں کہ واقعہ کی تحقیقات کے لئے غیر جانبدار جوڈیشل کمیشن بنایا جائے۔انہوں نے سوال کیا کہ کیا یہ جمہوریت ہے کہ رات کو سوئے ہوئے افراد پر حملہ کیا جائے،اتنا بڑا ظلم ملک کی تاریخ میں پہلے کبھی نہیں ہوا۔ پاکستان کے سفر کے لئے روانہ ہو رہا ہوں،23جون کی صبح 7بجے وطن واپس پہنچوں گا۔عوام جمہوری انقلاب کے لئے تیار ہو جائیں،کرپٹ حکمران قیامت بھی برپا کر دیں تو نہیں ڈروں گا،جان دے دوں گا لیکن عظیم مقصد سے پیچھے نہیں ہٹوں گا، آئین اور جمہوریت کو تباہ کرنے نہیں آ رہا،ہماری جدوجہد آئینی اور قانونی ہے۔

مزید :

لاہور -اہم خبریں -