بے حسی کی انتہا: ڈوبتے میاں بیوی کو دیکھ کر لوگ ہنستے رہے

بے حسی کی انتہا: ڈوبتے میاں بیوی کو دیکھ کر لوگ ہنستے رہے
بے حسی کی انتہا: ڈوبتے میاں بیوی کو دیکھ کر لوگ ہنستے رہے

  

اوسلو(نیوز ڈیسک) کسی کو تکلیف میں دیکھ کر ہمدردی کے جذبات کا امڈ آنا ایک فطری بات ہے لیکن رومانیہ میں ایک جوڑے کو غوطے کھاتے اور موت کے منہ میں جاتے دیکھ کر بھی لوگوں کو رحم نہ آیا بلکہ و ہ ان کی حالت پر قہقہے لگاتے رہے۔47سالہ کالن نیگو اور اس کی 45سالہ بیوی ڈنیا ایک گھوڑا گاڑی میں بیٹھ کر دریائے جیو میں گزر رہے تھے کہ اچانک تیز رفتار موجوں کی لپیٹ میں آگئے۔ شدید بارشوں کی وجہ سے دریامیں طغیانی آئی ہوئی تھی۔جس کا دونوںمیاں بیوی اندازہ نہ کرسکے اور تیز بہاﺅ میں پھنس گئے۔

قریب موجود ایک ماہی گیر نے ان کی مدد کرنے کے لئے گھوڑے کوتیزی سے آگے بڑھانے کی کوشش کی مگر دریا کی بپھری ہوئی لہروں نے انہیں اپنی لپیٹ میں لے لیا اور دونوں میاں بیوی غوطے کھانے لگے ،اسی دوران قریب میں کچھ مرد ایک کشتی میں موجود تھے اور ڈوبتے ہوئے جوڑے کی ویڈیو بنا رہے تھے۔ ان میں سے کچھ قہقہے لگاتے ہوئے ایک دوسرے سے پوچھ رہے تھے کہ دونوں ڈوب گئے ہیں یا نہیں۔ یہ بے رحم کھیل کچھ دیر جاری رہا اور بالآخر جان بچانے کےلئے ہاتھ پاﺅں مارتے ہوئے دونوں میاں بیوی دریا کی گہرائی میں غائب ہوگئے۔اس واقعے کی ویڈیو سامنے آنے کے بعد ڈوبنے والون کی قابل رحم حالت اور قریب موجود مردوں کی بے رحمی نے ہر ایک کو جھنجوڑ کر رکھا دیا ہے۔

مزید :

انسانی حقوق -