مہمند ایجنسی کے قبائلی جرگہ کا دہشتگردی میں ملوث عناصر کیخلاف لشکر کشی کا اعلان

20 جون 2016 (13:25)

مہمند ایجنسی (ویب ڈیسک) مہمند ایجنسی، بائیزئی لخکر کلی میں قبائلی جرگہنے دہشت گردی میں ملوث عناصر کے خلاف اجتماعی ذمہ داری کے تحت لشکر کشی کا اعلان کردیا۔

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

تفصیلات کے مطابق سرحد دیہات بائیزئی سب ڈویژن کے علاقہ لخکر کلی میں منگل خان نامی شخص کے کھیت کے درختوں کے پاس اینٹی پرسنل مائن (چھوٹے بارودی سرنگ) دھماکوں میں 3 بچوں کی زخمی ہونے کے واقعہ کے بعد بائیزئی قومی مشران کا ایک ہنگامی جرگہ   لخکر کلی میں منعقد ہواجس سے خطاب کرتے ہوئے اسسٹنٹ پولیٹیکل ایجنٹ بائیزئی سب ڈویڑن پیر عبداللہ شاہ نے قبائلی عوام اور بائیزئی مشران پر زور دیا کہ وہ اپنے علاقے میں امن بحال رکھنے کیلئے اجتماعی ذمہ داری قانون مزید مضبوط بنائے اور دن رات اپنے علاقے کے حدود میں ہر اجنبی اور مشکوک افراد کی سرگرمیوں پر کھڑی نظر رکھیں۔ انہوں نے کہا کہ لخکر کلی بارودی سرنگ چھوٹے نوعیت کا اینٹی پرسنل مائن دھماکہ تھا جس میں تین بچے زخمی ہوئے۔انہوں نے کہا کہ ابتدائی تحقیقات اور عمائدین سے معلومات کے بعد زیادہ تر امکان دشمنی اور خاندانوں آپس میں تنازعات کی وجہ معلوم ہوتی ہے۔ پولیٹیکل انتظامیہ نے انکوائری شروع کر دی ہے اور بہت جلد اصل محرکات اور ملزمان بے نقاب ہونگے۔

روزنامہ پاکستان کی خبریں اپنے ای میل آئی ڈی پر حاصل کرنے اور سبسکرپشن کیلئے یہاں کلک کریں

انہوں نے کہا کہ بائیزئی سب ڈویڑن کے عوام اور عمائدین اپنے گرد و پیش اور روڈ کی حفاظت میں اپنا کردار ادا کریں۔ اور آپس کے تمام تنازعات کیلئے پولیٹیکل انتظامیہ سے رجوع کریں اور شکایات کی صورت میں حکام کو آگاہ کیا کریں۔ جرگہ سے خطاب کرتے ہوئے ملک سلطان خان منذری چینہ ، لعل محمد خان، ملک میرک خان، ملک ہیکل خان اور ملک زیارت گل نے کہا کہ ہم حکومتی پالیسی کے مطابق قبائلی رسم و رواج کے تحت اجتماعی ذمہ داری میں بھر پور تعاو¿ن کر کے امن بحال رکھیں گے۔

مزیدخبریں