گوادر :جیونی میں پاک بحریہ کی گاڑی پر فائرنگ ،2اہلکار شہید،4زخمی

گوادر :جیونی میں پاک بحریہ کی گاڑی پر فائرنگ ،2اہلکار شہید،4زخمی

گوادر (مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) گوادر کے علاقے جیونی میں دہشتگردکی پاک بحریہ کی گاڑی پر فائرنگ سے 2 اہلکار شہید ، 4 زخمی ہو گئے ،جن میں سے ایک زخمی کی حالت نازک بتائی جا تی ہے ، جنہیں علاج کیلئے کراچی منتقل کر دیا گیا ہے۔ترجمان پاک بحریہ کا واقعے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہنا ہے شرپسندوں کی بزدلانہ کارروائیوں سے حوصلے پست نہیں ہونگے۔ ایسے شر پسندوں کو کیفرکردار تک پہنچایا جائے گا۔ وزیر اعظم نواز شریف اور آرمی چیف جنرل قمرجاوید باجوہ نے دہشت گرد حملے کی شدید مذمت کرتے ہوئے زخمیوں کی جلد صحت یابی کی دعاکی، اس موقع پر سیاسی و عسکری قیادت کا کہنا تھا ایسے بزدلانہ حملے دہشت گردی اور انتہا پسندی کیخلاف ہمارے عزم کو کمزور نہیں کرسکتے، سکیورٹی فورسز کی بے شمار قربانیوں کے طفیل صوبے میں امن کو یقینی بنایا گیا لہٰذا دشمن کو بلوچستان میں جاری بے مشال ترقی کے عمل میں رکاوٹ بننے کی اجازت نہیں دیں گے۔ تفصیلات کے مطابق بلوچستان کے ضلع گوادر کے علاقے جیونی میں نامعلوم مسلح افراد کی فائرنگ سے پاک بحریہ کے 2 اہلکار شہید جبکہ 3 زخمی ہوگئے۔جیونی کے سینئر انتظامی عہدیدار کے مطابق نیول اہلکار معمول کے مطابق جیونی سٹی سے افطار لے کر جارہے تھے کہ دو موٹر سائیکل پر سوار 4 مسلح افراد نے گھات لگا کر ان کی گاڑی پر فائرنگ کردی جس کے نتیجہ میں 2نیوی اہلکار موقع پر ہی شہید جبکہ 4 زخمی ہوگئے۔ترجمان پاک بحریہ کا کہنا تھا شرپسندوں کی فائرنگ سے زخمی ہونیوالے اہلکاروں کو کراچی منتقل کر دیا گیا ہے جہاں ایک زخمی کی حالت تشویشناک بتائی جاتی ہے۔ابتدائی طور پر حملے کی ذمہ داری کسی نے قبول نہیں کی۔ادھروزیر اعلیٰ بلوچستان نواب ثنااللہ زہری نے واقعے کی شدید مذمت کرتے ہوئے پولیس اور لیویز کو دہشت گردی کے اس حملے کی رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی۔ثنااللہ زہری کا اپنے مذمتی بیان میں کہنا تھا ہم دہشت گردوں کے آگے کسی صورت نہیں جھکیں گے،جبکہ وزیرداخلہ بلوچستان سرفرازبگٹی نے پاک بحریہ کی گاڑی پرفائرنگ کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ امن دشمن بزدلانہ کارروائیوں سے ہمیں مرعوب نہیں کرسکتے۔ حملے کو بزدلانہ قرار دیتے ہوئے شدید مذمت کی ہے ۔فائرنگ کے واقعے کے بعد علاقے میں سکیورٹی سخت کردی گئی اور شرپسندوں کی گرفتاری کیلئے سرچ آپریشن کا آغاز کردیا گیا۔

مزید : صفحہ اول


loading...