جلالپور جٹاں، داعش نیٹ ورک، ایک خاندان کے افغانستان منتقلی کا انکشاف

جلالپور جٹاں، داعش نیٹ ورک، ایک خاندان کے افغانستان منتقلی کا انکشاف

جلالپورجٹاں(نامہ نگار)دو نوجوانوں کے داعش میں بھرتی اور شام جنگ میں شرکت کی مبینہ اطلاعات کے بعد انکے پورے خاندان کی افغا نستان میں داعش کے زیر کنٹرول علاقہ میں موجود ہونے کی متضاد اطلاعات سے علاقہ میں تشویش کی لہر دوڑ گئی۔ تفصیلات کے مطابق جلالپورجٹاں قادر کالونی کے رہائشی دونوجوان گزشتہ سال شام جنگ میں شرکت کیلئے مبینہ طور پر داعش میں بھرتی ہوگئے۔ دونوں بھائی عبد السلام اورعبدالصمد سکول ٹیچر محمد افضل مرحوم کے بیٹے ہیں جبکہ انکی والدہ بھی تعلیم یافتہ اور سابق سکول ٹیچر بتائی جاتی ہیں، اطلاعات کے مطا بق عبدالسلام شام جنگ میں مارا جا چکا ہے جبکہ دوسرا بھائی عبدالصمد آجکل داعش کے زیر کنٹرول علاقہ افغانستان میں رہائش پذیر ہے وہ ا پنی والدہ ریحانہ ، دونوں بہنیں اور پھوپھی اسکے شوہر انکے دونوں بچوں کو بھی افغانستان میں لے جا چکا ہے اور انکے گھروں کو تالے لگے ہو ئے ہیں ،داعش کے علاقہ میں نیٹ ورک اور پورے خاندان کا افغانستان میں موجودگی کی اطلاعات پر جلالپورجٹاں بھر میں زیر بحث ہے جبکہ شدید تشویش پائی جارہی ہے۔ دونوں نوجوانوں کے ماموں شفقت اللہ اور اہل علاقہ نے سکیورٹی اداروں سے معاملے کی موثر تحقیقات ، حقائق سامنے لانے اور ذمہ داران کا تعین کر کے داعش کے نیٹ ورک میں ملوث افراد کیخلاف فوری کاروائی اور اسکے مکمل خاتمے کا مطالبہ کیا ہے۔

مزید : صفحہ آخر


loading...