100 سالہ قدیمی جامع مسجد الفردوس چوک رشید آباد اہلسنت کا اہم مرکز

100 سالہ قدیمی جامع مسجد الفردوس چوک رشید آباد اہلسنت کا اہم مرکز

ملتان (سٹی رپورٹر) چوک رشید آباد پر واقع جامع مسجد الفردوس جدید فن تعمیر کا شاہکار ہے جسے جماعت اہلسنت کے اہم مراکز میں شمار کیا جاتا ہے۔ جامع مسجد الفردوس چوک رشید 100سال قدیمی مسجد ہے جس کی بنیاد ملک عبد الحق نے رکھی ، ماضی میں مسجد پانچ مرلے زمین پر وقع تھی جو ایک کچے ہال ، برآمدہ پر مشتمل تھی جبکہ وضو کے لئے

(بقیہ نمبر41صفحہ12پر )

نمازی ہیند پمپ استعمال کرتے تھے ،1970میں مسجد کی پہلی بارا توسیع کی گئی جس میں مسجد کے قریب موجود پلاٹ خرید کر مسجد ااور اس سے ملحقہ مدرسہ میں شامل کیا گیا جس پر دس لاکھ روپے سے زائد کی لاگت آئی ، بعد ازاں سابق وزیر اعظم مخدوم سید یوسف رضا گیلانی ک دور حکومت میں چوک رشد�آباد کی توسیع اور فلائی اوور کی تعمیر کے دوران مسجد کا خا صہ حصہسٹرک کے اند ر آنے سے مسجد کو شہید کیا گیا جس کے بعد 2008میں جامع مسجد الفردوس کی دوبارہ سے تعمیر نو شروع کی گئی جس پر ایک کروڑ پچاس لاکھ رو پے کی لاگت آئی مسجد 15مرلہ زمین پر موجود ہے جو بیسمنٹ سمیت تین منزلہ ہے مسجد کے اوپر ایک 150فٹ بلند مینار اور ایک بڑ سبز گنبد ہے جو چوک رشید آباد کے فلائی اوور سے گزرنے والے ہر شخص کی توجہ کا مرکز رہتا ہے جامع مسجد الفردوس اہلسنت مکتبہ فکر میں اہم حیثیت کی حامل ہے جہاں ایک ہزار سے زائد افراد بیک وقت نماز ادا کر سکتے ہیں رمضان المبارک میں درجنوں افراد یہاں اعتکاف بیٹھتے ہیں، ماہ صیام کے دیگر ایام میں تفسیر قرآن کی نشستوں کا اہتمام کیا جاتا ہے جس میں بڑی تعداد میں افراد شرکت کرتے ہیں۔جامع مسجد الفردوس میں بچوں کو بڑھانے کے لئے مدرسہ بھی موجود ہے جس میں 250بچے زیر تعلیم ہیں جبکہ 50بچے مدرسہ میں زیر رہائش ہیں جن کی تعلیم کے ساتھ ساتھ خوراک کی زمہ داری بھی مدرسہ انتظامیہپر ہیں جبکہ مسجد انتظامیہ کے زیر اہتمام خوشحال کالونی میں طالبات کے لئے بھی جامعہ سعدیہ لبنات کے نام سے مدرسہ قائم ہے جس میں ساڑھے پانچ سوسے زائد طالبات زیر تعلیم ہیں جامعہ سعدیہ البنات کی بلڈنگ پر 70لاکھ کی لاگت آچکی ہے جو کہ تاحال بھی زیر تعمیر ہے ۔

مسجد

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...