اللہ کے بعد عدلیہ پر اعتماد،کلبھوشن جیساسلوک نہ کیا جائے،جمشید دستی

اللہ کے بعد عدلیہ پر اعتماد،کلبھوشن جیساسلوک نہ کیا جائے،جمشید دستی

کوٹ ادو(نامہ نگار) جمشید دستی کی دوران ملاقات میں ایڈووکیٹ عامر سلطان گورایاایڈووکیٹ جام یونس ناصر چوہان نے ملاقات کی جس میں جمشید دستی نے کہا کہ میں نے بھوک ہرتال ٹارچر سیل میں بند کرنے کی وجہ سے کی مجھے قید تنہائی میں رکھا ہو اہے،، کڑوا پانی پینے سے میرا معدہ بھی خراب ہو گیا جیل انتظامیہ نے میرے گھر سے کھانا لانے پر پابندی عائد کر دی ہے انتہائی کم جگہ پر انتہائی نامساعد (بقیہ نمبر37صفحہ7پر )

حالات میں رہ رہا ہوں میرا طبی معائنہ نشئیوں کے علاج کرنے والے ڈاکٹر سے کروایا گیا ہے جو قابل قبول نہیں۔ ایم این اے کے خلاف شرمناک رویہ روا رکھا جا رہا ہے میری قانونی ٹیم کو نہیں ملنے دیا جا رہا اور قومی اخبارات بھی مہیا نہیں کیئے جا رہے اللہ کے بعد عدلیہ پر اعتماد ہے، مجھ سے کلبھوشن جیسا سلوک نہ کیا جائے اگر مجھے کچھ ہوا تو اس کی ذمہ داری نواز شریف، رانا ثنااللہ ، شہباز شریف اور آئی جی پنجاب اور جیل خانہ جات ہوں گے مجھے ذہنی ازیت دی جا رہی ہے اور بھوکا رکھا جا رہا ے میرے خلاف جھوٹے مقدمات درج کرائے جا رہے ہیں میری بوڑھی والدی، کینسر کی مریض ہمشیرہ اور بھائیوں سے ملنے کی اجازت نہیں ہے چیف جسٹس سپریم کورٹ آف پاکستان۔ چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ لاہور سے التماس ہے کہ وہ اس بارے میں از خود نوٹس لیں جمہوری دور میں مجھ سے آمریت دور سے بھی زیادہ ظلم کیا جا رہا ہے چیف جسٹس صاحبان مجھے بلائیں اور میرا طبی معائنہ کروائے میں نے26 مئی کو بجٹ سیشن میں احتجاج کیا تھا جس کے بعد 5 وکلا کی ٹیم نے مجھے سنگین نتائج بھگتنے کی دھمکیاں دی تھی میرے خلاف پانچ وزرا کی ٹیم کے کہنے پر من گھڑت سٹوری بنا کر مجھے گرفتار کرایا گیا ہے۔کارکنوں کوصبر و حوصلے کی تلقین، اعلیٰء عدلیہ سے انصاف کا طلب گار ہوں۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...