جمشید دستی انسداد دہشتگردی کی عدالت پیش، سماعت 23جون تک ملتوی

جمشید دستی انسداد دہشتگردی کی عدالت پیش، سماعت 23جون تک ملتوی

شاہ جمال، مظفرگڑھ، چوک مکول، کوٹ ادو (نمائندہ پاکستان،نامہ نگار)جمشید دستی کو انسداد دہشت گردی کی عدالت میں پیش کر دیا گیا محکمہ اریگیشن کے وکیل نے جمعہ تک کا وقت مانگ لیا عدالت نے سماعت جمعہ تک ملتوی کر دی۔گزشتہ روزصبح جمشید دستی کو عدالت میں پیش کرنے کیلئے پولیس نے سخت حفاظتی انتظامات کر لیئے جیل حکام انہیں لینے کیلئے گئے جمشید دستی نے عدالت میں پیش ہونے سے انکار کر دیا جنہیں ڈی آ ئی جی ڈیرہ غازیخان مذاکرات کر کے گاڑی میں سوار کرایا گاڑی میں آتے ہی جنوبی پنجاب کے ضلع مظفر گرھ کے منتخب ایم این اے کو پولیس نے ہتھکڑی لگا دی اور سخت حفاظتی حصار میں عدالت لایا گیا جہاں ان کے سپورٹرز بڑی تعداد میں موجود تھے جنہیں اپنے محبوب قائد کے قریب تک نہ پھٹکنے دیا گیا بات تک نہ کرنے دی گئی جمشید احمد دستی نے دور سے ہی ہاتھ ہلا کر ہیلو ہا ئے کی وہ طبی طور پر انتہائی کمزور دکھائی دے رہے تھے انہیں عدالت میں پیش کیا گیا تو محکمہ ایری گیشن کے وکیل نے اپنا وکالت نامہ جمع کراتے ہوئے کیس ی تیاری کیلیئے وقت مانگا جس پر عدالت نے 23جون تک سماعت ملتوی کردی ریاستی رویہ پر ان کے رفقاء کار سہیل غوری،میاں عاطف شہزاد دھنوتر،،مہران سعید ملک و دیگر نے افسوس کا اظہار کرتے ہو ئے کہا کہ پاکستان کا پانی بند کرنے والے مودی کے یاروں نے غریب عوام اور کسان کا پانی چھوڑنے پر دور یزید کی یاد تازہ کر دی جبکہ جمشید دستی نے سنت شبیری کو زندہ کر دیا۔کوٹ ادو سے نامہ نگار کے مطابق سول جج وسپیشل مجسٹریٹ سید کاشف رضا زیدی کی عدالت میں جمشید دستی کیس کی سماعت کی گئی جوکہ چوک سرور شہیدمیں جمشید دستی کے خلاف رائفل برآمد ہونے پر13/20/65 ت پ کی ایف آئی آر درج ہوئی تھی جمشید دستی کے وکیل عامر سلطان گوراہا نے درخواست دائر کی جس میں موقف اختیار کیاگیا کہ مزکورہ مقدمہ میں اسپیشل مجسٹریٹ کی حیثیت سے جمشید دستی کو عدالت میں بلوایا جائے وکیل عامر سلطان گوراہاکے مطابق پولیس چوک سرورشہید نے عدالتی حکم کے باوجود پیش نہ کیا ۔جس پر عدالت عالیہ نے پولیس چوک سرورشہید کو آج بروز منگل جمشید احمد دستی کو کوٹ ادو سپیشل مجسٹریٹ کی عدالت میں پیش کرنے کا حکم دیا گیا۔

جمشید دستی،عدالت پیش

مظفرگڑھ،چوک مکول (نامہ نگار) پاکستان عوامی راج پارٹی خان پور کے

(بقیہ نمبر38صفحہ7پر )

زیر اہتمام مقامی شوگر ملز چوک تک جمشید احمد دستی کی رہائی کے لیے احتجاجی ریلی نکالی گئی جس کی قیادت ملک فاروق اور میڈیا کو آرڈینیٹر جنوبی پنجاب رانا عمران قادر نے کی ۔جس سے خطاب کرتے ہوئے رہنما ؤں نے کہا کہ ن لیگ کی حکومت ہمیشہ مخالفین کیخلاف انتقامی کار روائیاں کرتی رہی ہے اور اب بھی پنجاب حکومت نے سیاسی سر گرمیوں پر پابندی لگا رکھی ہے شریف برادران منقسم مزاج حکمران ہیں آئندہ الیکشن میں عوام انہیں مسترد کر دے گی ۔پانامہ کیس کے چوروں سے عوام ڈرنے والی نہیں ریلی کے شرکا ء نے پنجاب حکومت اور پولیس کیخلاف نعرے لگائے اور جمشید احمد دستی کی رہائی کا مطالبہ کیا ۔دریں اثناء متحدہ قومی مومنٹ ڈپٹی کنوینینئر پروفیسر ڈاکٹر حسن ظفر نے مرکزی سیکرٹری اطلاعات رانا امجد علی امجد ایڈ ووکیٹ سے رابطہ کیاہے اور جمشید احمد دستی کی گرفتاری کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان کی گرفتاری بد ترین سیاسی انتقام کی مثال ہے انہیں جمشید احمد دستی پسے ہوئے طبقے کی آواز ہیں اور پنجاب حکومت مظلوموں کی اس آواز کو طاقت کی ذریعے دبا نا چاہتی ہے جس کی ایم کیو ایم سخت مذمت کرتی ہے اور جمشید احمد دستی کی رہائی کا مطالبہ کرتی ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...