جرم سنگین ہے ، ضمانت پررہا نہیں کیا جا سکتا،عدالت نے گردہ سکینڈل کے ملزم کی درخواست ضمانت خارج کر دی

جرم سنگین ہے ، ضمانت پررہا نہیں کیا جا سکتا،عدالت نے گردہ سکینڈل کے ملزم کی ...
جرم سنگین ہے ، ضمانت پررہا نہیں کیا جا سکتا،عدالت نے گردہ سکینڈل کے ملزم کی درخواست ضمانت خارج کر دی

  


لاہور ( نامہ نگار خصوصی)ضلع کچہری کے جوڈیشل مجسٹریٹ نے گردہ سکینڈل میں گرفتار ایجنٹ قمر عباس کی ضمانت پر رہائی کی استدعا مسترد کرتے ہوئے قرار دیا ہے کہ گردہ سکینڈل کا ملزم سنگین جرم میں ملوث ہے اور ضمانت پر رہائی کا حقدار نہیں ہے۔

سپریم کورٹ نے چارارب سے زائد سیلز ٹیکس کی عدم ادائیگی پرگرفتار ملزموں درخواست ضمانت پرجواب طلب کر لیا

جوڈیشل مجسٹریٹ فاروق اعظم سوہل نے ملزم قمر عباس کی درخواست ضمانت پر سماعت کی، ملزم کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ ملزم کو گردہ سکینڈل میں بے بنیاد ملوث کیا گیا ہے جبکہ ملزم کا ڈاکٹر فواد اور ڈاکٹر التمش سے کوئی تعلق نہیں، ملزم کے وکیل نے دلائل دیئے کہ ایف آئی آر میں ملزم پر ڈاکٹروں کی معاونت کرنے کا الزام عائد کیا گیا ہے، ملزم ایف آئی آر میں نامزد نہیں اور ملزم سے کوئی ریکوری ہونا بھی باقی نہیں لہٰذا ملزم قمر عباس کو ضمانت پر رہا کرنے کا حکم دیا جائے، پراسیکیوشن نے موقف اختیار کیا کہ گردہ سکینڈل میں گرفتار تمام ملزم ایک بڑے گروہ کی طرح پاکستان میں پھیلے ہوئے تھے، ڈاکٹر فواد اور ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کے جنرل سیکرٹری ڈاکٹر التمش کھرل ایک نیٹ ورک کی طرح کام کرتے ہوئے ملزم غریب پاکستانیوں کو پیسے کا لالچ دے کر گردے نکلوانے پر مجبور کرتے تھے، ملزم قمر عباس گردوں کی غیر قانونی پیوند کاری میں ڈاکٹر فواد اور ڈاکٹر التمش کے ایجنٹ کے طور پر کام کرتا رہا ہے جبکہ ملزم ایف آئی اے کی تفتیش میں ملزم گنہگار پایا گیا ہے لہٰذا ملزم قمر عباس کو ضمانت پر رہا کرنے کی درخواست خارج کی جائے، عدالت نے فریقین کے وکلا کے تفصیلی دلائل سننے اور ریکارڈ کا جائزہ لینے کے بعد گردہ سکینڈل میں گرفتار ایجنٹ قمر عباس کی ضمانت پر رہائی کی استدعا مسترد کرتے ہوئے قرار دیا ہے کہ گردہ سکینڈل کا ملزم سنگین جرم میں ملوث ہے اور ضمانت پر رہائی کا حقدار نہیں ہے.

مزید : لاہور


loading...