نگران حکومت کا کام شفاف انتخابات کا انعقاد یقینی بنانا ہے : سراج الحق

نگران حکومت کا کام شفاف انتخابات کا انعقاد یقینی بنانا ہے : سراج الحق

تیمرگرہ( بیورورپورٹ ) امیرجماعت اسلامی سینیٹرسراج االحق نے کہا کہ نگران حکومت کا کام شفاف انتخابات کا انعقاد یقینی بنانا ہے نہ کہ روپے کی قدر میں کمی لانا، سیاسی یتیموں کی جانب سے ٹھکانے تبدیل کرنے سے پہلے اُ ن کا بے لاگ احتساب یقینی بنایا جائے،علاقہ کے امن کو خراب کرنے کی سازشیں ہو رہی ہیں ،پائیدار امن کے قیام کے لئے سیکورٹی فورسز اور عوام نے بے شمار قربانیاں دی ہے امن برقرار ر کھنے کے لئے ہر حدتک جا ینگے اور تمام سازشوں کوناکام بنایا جا ئیگا ۔لوئیر دیر کے علاقہ منڈا میں عیدملن پارٹی سے خطاب کرتے ہو ئے جماعت اسلامی کے مرکزی امیرسراج الحق نے واضح کیا کہ اس وقت عام انتخابات کے بروقت اانعقاد حوالے سے سوالات اٹھائے جارہے ہیں ،قوم کے پاس بروقت انتخاب کے علاوہ کوئی چوائس نہیں نہیں ،کمزور جمہوریت ترقی کر ئیگی جب قوم دیانت دار قیاد ت کو موقع دئیگی ،جماعت اسلامی اقتدار میں آکر چوروں اور لٹیروں کے ساتھ بے لاگ حتساب یقینی بنائی گی ،چندلٹیروں کے علاوہ باقی ساری قوم امانت دار ہے ،سراج الحق کا کہنا تھا کہ سپریم کو رٹ کی جانب سے پانامہ کیس کے نتیجے میں وزیر اعظم کو تو بر طرف کیا گیا مگر پانامہ کیس میں موجود باقی 436افراد کے حوالے سے سپریم کورٹ ابھی تک خاموش ہے اورنیب بھی،سیاسی یتیموں کی جانب سے وفاداریاں تبدیل کرنے اور عام انتخابات سے سے پہلے اُ ن کا بے لاگ احتساب ضروری تاکہ پہلے احتساب کے ذر یعے ان کا راستہ روکا جائے، انہوں نے کہا کہ خیبر پختون خواہ کو ایک میثالی صوبہ ہمارامشن ہے، ،علاقہ کے امن کو خراب کرنے کی سازشیں ہو رہی ہیں ،پائیدار امن کے قیام کے لئے سیکورٹی فورسز اور عوام نے بے شمار قربانیاں دی ہے امن برقرار ر کھنے کے لئے ہر حدتک جا ینگے اور تمام سازشوں کوناکام بنایا جا ئیگاانہوں نے کہا کہ مجلس عمل قوم کی امیدوں کا مرکز ہے ،ملک میں قانون کی حکمرانی ،قرآن وسنت کی بالادستی ،یکساں نظام تعلیم کے لئے کوشاں ہے ،سراج الحق نے کہا کہ کسانوں کو منافع میں شریک کرنا ،عدالتوں میں مظلوم کو ،اسپتالوں میں مریضوں اور سکولوں میں طلبہ کو وی آئی اسٹیٹس دینا اولین ترجیحات ہے،انہوں نے کہا کہ موجودہ نظام لوگوں کو انصاف فراہم کرنے میں ناکام ہو چکاہے وقت آگیا ہے کہ قوم حقیقی تبدیلی کے لے مجلس عمل کا2018کے عام انتخابات مین ساتھ دے ،دینی قوتیں منتشر تھی تو بھی اعتراض تھا اور اب متحد ہو چکی ہے تو بھی لوگ اعترض کرہے ہیں،عید ملن پارٹی سے سابق ایم پی اے اعزازالملک افکاری،ضلعی امیر مولانا اسد اللہ خان اور دیگر مقررین نے بھی خطاب کیا

مزید : صفحہ آخر


loading...