شہباز شریف کا کراچی سے الیکشن لڑنا بہتر فیصلہ ہے

شہباز شریف کا کراچی سے الیکشن لڑنا بہتر فیصلہ ہے

کراچی : تجزیہ مبشر میر

صدر مسلم لیگ (ن) شہباز شریف کا کراچی سے الیکشن لڑنا بہتر فیصلہ ہے ۔اس سے مسلم لیگ کو کراچی میں اپنا بیانیہ بہتر انداز میں پیش کرنے کا موقع ملے گا ۔مسلم لیگ کراچی میں امن کی بحالی کا کریڈٹ لیتے ہوئے انتخابی انتخابی مہم میں ووٹرز کو متاثر کرنے کی کوشش کرے گی ۔اگرچہ مسلم لیگ (ن) کے راہنما یہ دعویٰ کررہے ہیں کہ سیٹ ایڈجسٹمنٹ کے لیے ان کے دروازے کھلے ہیں اور سندھ کی تمام سرکردہ پارٹیوں سے وہ رابطے میں ہیں لیکن ذرائع کے مطابق سندھ میں دیگر پارٹیاں مسلم لیگ (ن) سے سیٹ ایڈجسٹمنٹ کے لیے تیار نہیں ہیں ۔ڈاکٹر فاروق ستار کی کمزور سیاسی پوزیشن کی وجہ سے پی آئی بی گروپ اپنی افادیت کھوچکا ہے جبکہ بہادرآباد گروپ مہاجر ووٹ کا نعرہ شدومد سے لگائے گا ۔اس بات کا قوی امکان دکھائی دیتا ہے کہ سندھ کی سطح پر جی ڈی اے ،پی ایس پی ،ایم کیو ایم بہادر آباد اور پی ٹی آئی سیٹ ایڈجسٹمنٹ کرنے میں کامیاب ہوجائیں گے ۔پیپلزپارٹی اگر چہ تنہا دکھائی دیتی ہے لیکن اے این پی کی قیادت کے ساتھ اس کی قربت موجود ہے ۔امیدواروں کی مکمل اسکروٹنی کے بعد ہی سیاسی راہنما اور سیاسی جماعتیں انتخابی اتحاد یا سیٹ ایڈجسٹمنٹ کے فارمولے آزمانے کی کوشش کریں گی ۔سندھ کے سیاسی ماحول میں ایم ایم اے ابھی تک متاثر کن یا قابل ذکر پروگرام پیش نہیں کرسکی ۔کراچی کی حد تک جماعت اسلامی ایک متحرک سیاسی پارٹی کے طور پر نظر آتی ہے جس کا کراچی میں ووٹ بینک بھی موجود ہے ۔اس بات کا امکان دکھائی دیتا ہے کہ ایم ایم اے میں جماعت اسلامی ہی زیادہ فعال اور متحرک دکھائی دے گی جسے کامیابی کے لیے بہت محنت درکار ہوگی ۔کراچی سیاسی جماعتوں کے لیے آسان ہدف نہیں ہوگا سب کو بہت محنت درکار ہوگی اور مقابلہ بھی سخت دکھائی دیتا ہے ۔

تجزیہ مبشر میر

مزید : تجزیہ


loading...