”ہم ڈیڑھ سال سے ایک ساتھ تھےاور مہوش ۔۔۔“فیصل آباد میں بس ہوسٹس کے قتل کے الزام میں گرفتار سیکیورٹی گارڈ نے ایسا دعویٰ کر دیا کہ جان کر آپ کے پیروں تلے بھی زمین نکل جائے گی

”ہم ڈیڑھ سال سے ایک ساتھ تھےاور مہوش ۔۔۔“فیصل آباد میں بس ہوسٹس کے قتل کے ...
”ہم ڈیڑھ سال سے ایک ساتھ تھےاور مہوش ۔۔۔“فیصل آباد میں بس ہوسٹس کے قتل کے الزام میں گرفتار سیکیورٹی گارڈ نے ایسا دعویٰ کر دیا کہ جان کر آپ کے پیروں تلے بھی زمین نکل جائے گی

  


فیصل آباد(ڈیلی پاکستان آ ن لائن )فیصل آباد میں بس ہوسٹس مہوش کے قتل کے الزام میں گرفتار سیکیورٹی گارڈ نے اعتراف جر م کر لیاہے اور کہاہے کہ مہوش اور میں ڈیڑھ سال سے ایک ساتھ تھے اور شادی کرنے والے تھے لیکن مہوش نے انکار کر دیا جس پر اسے قتل کر دیا ۔

تفصیلات کے مطابق عمر دراز نے اعتراف جرم کرتے ہوئے کہا کہ میں اس دن مہوش کی جانب سے شادی سے انکار کر پر اسے ڈرانے کیلئے آیا تھا لیکن غصے میں آ کر اسے قتل کر دیا ، قانون جو بھی سزا دے گا قبول کروں گا ۔ عمردراز پہلے سے ہی شادی شدہ ہے اور دو بچوں کا باپ بھی ہے ۔

واضح رہے کہ 9 جون کو سوشل میڈیا پر بس ایئر ہوسٹس کو گارڈ کی جانب سے گولی مارنے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائر ل ہوئی جس کے بعد اعلیٰ حکام بھی حرکت میں آئے اور ملزم کی فوری گرفتاری کیلئے احکامات جاری کیے جس کے بعد ملزم کو گرفتار کر لیا گیا اور مقدمہ درج کر کے کارروائی کا آغاز کر دیا گیا ۔

مزید : علاقائی /پنجاب /فیصل آباد


loading...