خیبر پختونخوا میں انسولین کی قیمتیں اتنی بڑھادی گئیں کہ مریضوں کی چیخیں نکل گئیں

خیبر پختونخوا میں انسولین کی قیمتیں اتنی بڑھادی گئیں کہ مریضوں کی چیخیں نکل ...
خیبر پختونخوا میں انسولین کی قیمتیں اتنی بڑھادی گئیں کہ مریضوں کی چیخیں نکل گئیں

  


پشاور (ڈیلی پاکستان آن لائن) وفاقی حکومت نے مالی سال 2019-20 کے بجٹ میں شوگر مہنگی کی تو پی ٹی آئی کی خیبر پختونخوا حکومت نے شوگر کے مریضوں کی ادویات کی قیمتوں میں اضافہ کردیا۔

خیبر پختونخوا کی صوبائی حکومت نے موجودہ مہنگائی کے دور میں گھریلو اخراجات پورے کرنے کیلئے پریشان شہریوں کی پریشانی میں ایک اور اضافہ کردیا۔ صوبے میں شوگر کی ادویات مہنگی کردی گئی ہیں جس کے بعد انسولین کی قیمت میں 32 فیصد اضافہ ہوگیا ہے۔

بدھ کے روز کے پی میں انسولین 645 روپے کی مل رہی تھی لیکن جمعرات کے روز اس کی قیمت 888 روپے تک پہنچ چکی ہے۔ شوگر کے بعض مریض ایسے بھی ہیں جنہیں ایک دن میں 2 سے 5 مرتبہ تک انسولین کی ضرورت پڑتی ہے، ایسی صورتحال میں حکومت کی جانب سے کی جانے والی مہنگائی کے باعث مریضوں کی چیخیں نکل گئی ہیں۔

مزید : علاقائی /خیبرپختون خواہ /پشاور