آٹا کی مہنگے داموں فروخت جاری، پٹرول کی قلت بھی برقرار، عوام خوار

آٹا کی مہنگے داموں فروخت جاری، پٹرول کی قلت بھی برقرار، عوام خوار

  

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) فلور ملز اور حکومت کے درمیان آٹے کی قیمت کا تنازع حل نہیں ہو سکا، لاہور میں 20 کلو آٹے کا تھیلا 1035 روپے میں فروخت ہونے لگا۔ ایک ماہ قبل 825 روپے میں دستیاب 20 کلو آٹے کا تھیلا اب 1035 روپے اور 10 کلو کا تھیلا 525 روپے میں مل رہا ہے۔ فلور ملز مالکان کا کہنا ہے کہ اوپن مارکیٹ میں گندم 1900 روپے من تک پہنچ چکی ہے، پرانی قیمت پر آٹا فروخت نہیں کر سکتے۔دوسری جانب صوبائی دارالحکومت سمیت مختلف شہروں میں پٹرول کی قلت برقرار ہے، عوام اب بھی پٹرول کے حصول کیلئے خوار ہو رہے ہیں جبکہ پٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن نے وزیراعظم کے اقدامات کا خیر مقدم کیا ہے۔تفصیلات کے مطابق آئل مارکیٹنگ کمپنیوں نے سپلائی تو بحال کی مگر کھپت کے مقابلے میں بہت کم ہے، پٹرول پمپس پر موٹر سائیکل سوار کو 100 سے 200 روپے جبکہ گاڑیوں کو ایک ہزار روپے تک پٹرول فروخت کیا جا رہا ہے۔ ادھر پاکستان پٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن نے پٹرول بحران کے ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کا خیر مقدم کیا ہے۔ نائب صدر چودھری نعمان مجید نے نجی ٹی وی سے گفتگو میں کہا کہ لوگ پٹرول پمپ مالکان کو بحران کا ذمہ دار سمجھ رہے تھے لیکن اب وزیراعظم نے اصل ذمہ داروں کو سزائیں دینے کی ہدایت کر دی ہے۔ آئل مارکیٹنگ کمپنیوں کی جانب سے 20 ہزار یومیہ کھپت والے پٹرول پمپ پر صرف 5 ہزار سے 8 ہزار لیٹر پٹرول فراہم کیا جا رہا ہے۔

آٹا/پٹرول

مزید :

صفحہ اول -