جسٹس فائز عیسیٰ کو بری الذمہ قرار دے دیا گیا،عرفان قادر

  جسٹس فائز عیسیٰ کو بری الذمہ قرار دے دیا گیا،عرفان قادر

  

اسلام آباد(آن لائن) سابق اٹارنی جنرل عرفان قادر نے کہا ہے کہ سپریم کورٹ نے جسٹس فائز عیسیٰ کو بری الذمہ قرار دے دیا ہے، آج کے فیصلے سے یہ تاثر ملتا ہے کہ جائیدادوں سے جسٹس صاحب کا کوئی تعلق نہیں، مزید تبصرہ تفصیلی فیصلے کے بعد ہی کر سکتا ہوں۔ نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے سابق اٹارنی جنرل عرفان قادر نے کہا کہ جسٹس فائز عیسیٰ کی نہیں بلکہ جائیدادیں ان کی اہلیہ کی تھیں اور اس حوالے سے ان کی اہلیہ نے سپریم کورٹ میں اپنا بیان ریکارڈ کرایا۔ جسٹس فائز عیسیٰ کی اہلیہ کا سپریم کورٹ میں موقف آنے کے بعد سپریم کورٹ کے دس رکنی بنچ نے سمجھا کہ جسٹس عیسیٰ کا ان جائیدادوں سے کوئی تعلق نہیں ہے اس لئے عدالت نے سمجھا کہ اگر جائیدادیں ظاہر نہیں کی گئیں تو ان کی اہلیہ نے ایسا نہیں کیا۔ عدالت نے ایف بی آر کو براہ راست جسٹس فائز عیسیٰ کی اہلیہ سے ان جائیدادوں سے متعلق پوچھنے کا کہا اور اب ایف بی آر ان کی بیگم کو نوٹس جاری کرے گا اور ٹیکس کے معاملے کو حل کرے۔ جہاں تک جسٹس فائز عیسیٰ کا تعلق ہے تو عدالت نے ان کو بری الذمہ قرار دے دیا ہے اور آج کے فیصلے سے یہی تاثر ملتا ہے کہ جسٹس فائز عیسیٰ کا جائیدادوں سے کوئی تعلق نہیں تھا اور ان جائیدادوں کے جسٹس فائز عیسیٰ کے ہونے بارے کوئی ثبوت بھی نہیں تھا۔ یہی وجہ ہے کہ عدالت نے ریفرنس کو کالعدم قرار دے دیا ہے۔

عرفان قادر

مزید :

صفحہ آخر -