بیوپاریوں کا ایکا، گندم خفیہ گوداموں میں سٹاک، نرخ بے قابو، آٹا بھی مہنگا

  بیوپاریوں کا ایکا، گندم خفیہ گوداموں میں سٹاک، نرخ بے قابو، آٹا بھی مہنگا

  

ٹبہ سلطان پور(نمائندہ پاکستان) گندم کی کٹائی کے ڈیڑھ ماہ بعد ہی گندم کے فی من ریٹ میں 450روپے فی من اضافہ ہو گیا ہے،ٹبہ سلطان پور اور اس کے نواحی علاقوں میں زمینداروں اور کاشتکاروں کی جانب سے اسٹاک کی گئی گندم اب فروخت کرنے لگے مزید (بقیہ نمبر45صفحہ7پر)

اضافے کا بھی امکان ظاہر کیا گیا ہیتفصیل کے مطا بق گندم کی کٹائی ختم ہوئے ابھی ڈیڑھ ماہ ہی مکمل ہوا کہ گندم کا فی من ریٹ بھی بڑھ گیا ہے اس وقت بیوپاری بڑے زمینداروں اور کاشتکاروں سے گندم کی خریداری 1850روپے فی من کررہے ہیں گذشتہ ڈیڑھ ماہ کے دوران گندم کے فی من ریٹ میں 450روپے اضافہ ہوچکا ہے بیوپاریوں کاکہنا ہے کہ گندم کے فی من نرخ مزید بھی بڑھنے کے امکانات ہیں ٹبہ سلطان پور کے مختلف علاقوں میں دوسرے اضلاع کے بیوپاری گندم خرید اری کرنے میں مصروف ہیں ذرائع کے مطا بق بیوپاری گندم کی خریداری کر کے اپنے خفیہ گوداموں میں کررہے ہیں اگست کے بعد گندم کا فی من ریٹ2ہزار روپے سے بھی بڑھنے کا خدشہ ظاہر کیا گیا ہے مارکیٹ میں اس وقت ناقص غیر معیاری آٹا فی من22سو روپے تک فروخت ہورہا ہے لیکن حکو مت اور سرکاری آفسران خواب غفلت کی نیند سورہی ہے علاقہ کی مختلف تنظیموں کے افراد نے شدید احتجاج کرتے ہوئے حکو مت سے مطا لبہ کیا ہے کہ گندم اور آٹے کے بڑھتے ہوئے نرخوں کو کنٹرول کر نے کے لئے سخت اقدامات کرنے کامطا لبہ کیاہے۔

گندم

مزید :

ملتان صفحہ آخر -