پٹرول بحران: انتظامیہ کاذمہ داروں کیخلاف فوری کارروائی کاحکم

      پٹرول بحران: انتظامیہ کاذمہ داروں کیخلاف فوری کارروائی کاحکم

  

ملتان، اڈا پل 14، خانیوال (نیوز رپورٹر، نامہ نگار، نمائندہ پاکستان، نامہ نگار)پٹرولیم مصنوعات کی تمام پٹرول پمپس پر سو فیصد دستیابی یقینی بنانے کے لئے ضلعی انتظامیہ سرگرم ہے۔حکومت پنجاب نے ضلعی انتظامیہ کو آئل کمپنیز کی ڈپو چیک کرنے اور پٹرول پمپس پر پٹرول کی سٹوریچ کی پڑتال کرنے کی ہدایت کی ہے اور پٹرول کی مصنوعی قلت پیدا کرنے والوں کے خلاف سخت کاروائی کا حکم دیا ہیڈپٹی کمشنر عامر خٹک کی ہدایت پر اے سی صدر شہزاد محبوب کا شیر شاہ کا دورہ کیا اور پی ایس او اور شیل پٹرولیم کمپنی کے ڈپو کو چیک کیا۔اسسٹنٹ کمشنر صدر شہزاد محبوب نے اس حوالے (بقیہ نمبر8صفحہ6پر)

سے ڈپٹی کمشنر عامر خٹک کو رپورٹ پیش کردی جس میں کہا گیا ہے کہ پی ایس او کے ڈپو میں 10 لاکھ لٹر پٹرول اور 10 لاکھ لٹر دستیاب ہے اور پی ایس او کے ملتان میں واقع پٹرول پمپس پر مسلسل آئل کی سپلائی جاری ہے۔ ہے،رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ شیل کمپنی کے پٹرول پمپس پر محمود کوٹ سے پٹرول اور ڈیزل فراہم کیا جارہا ہے اور شیل آفس کے ریکارڈکے مطابق گزشتہ روز ملتان کے پمپس کو 4 لاکھ لٹر ڈیزل اور پٹرول فراہم کیاگیاشہزاد محبوب نے رپورٹ میں مزید بتایا گیا ہے کہ چار یوم کے اندر کراچی سے بھی شیل پٹرولیم پراڈکٹس کی سپلائی شروع کر دی جائے گی،رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ شیل کمپنی کا ملتان میں واقع ڈپو ضروری مرمت کی وجہ سے بند ہے۔جہانیاں شہر اور گردنواح چکنمبر121دس آر،118دس آر،136دس آر،138دس آر،123دس آر اور دیگر چکوک میں غیر قانونی منی پٹرول پمپس قائم ہو گئے ہیں۔ذرائع کے مطابق یہ مافیا سول ڈیفنس اور انتظامیہ کو منتھلیاں دے رہا ہے جس وجہ سے اس مافیا کیخلاف انتظامیہ کاروائی سے گریزاں ہے۔جبکہ شہریوں نے بتایا کے یہ منی پٹرول پمپس سرکاری ریٹ سے بھی ڈبل 150روپے تک لیٹر تیل دے رہا ہے جس وجہ سے حکومت کو لاکھوں روپے کا نقصان ہو رہا ہے۔یہ مافیا پٹرول میں ملاوٹ بھی کر رہا ہے جس سے گاڑیاں،موٹرسائیکلیں کھٹارہ بنتی جارہی ہیں۔ڈپٹی کمشنر / کنٹرولر سول ڈیفنس آغا ظہیر عباس شیرازی کی زیر سرپرستی ضلع خانیوال میں غیرقانونی پٹرول پمپس،منی پٹرول پمپس اور آئل ایجنسیوں کے خلاف 3 ماہ سے جاری مہم کی رپورٹ جاری کردی گئی۔رپورٹ کے مطابق ضلع بھر میں کریک ڈاؤن کے دوران پٹرول پمپس کا غیر قانونی کام کرنے والے 49 افراد کے خلاف ایف آئی آرز کا اندراج کرایا گیا 25 غیرقانونی پٹرول پمپس،22 منی پٹرول پمپس اور دوآئل ایجنسیوں پر کارروائی کر کے 34 یونٹس مشینوں کو سرکاری تحویل میں لے کر 33،آئل ٹینکس،13 پٹرول یونٹس مشینیں مع آئل ٹینکس اور دو دکانوں کو سیل کرایا گیا۔ضلع خانیوال کی تحصیل کبیروالا میں 19،تحصیل میاں چنوں میں 17،تحصیل جہانیاں میں 6،اور تحصیل خانیوال میں 9غیر قانونی پٹرول پمپس،منی پٹرول پمپس اور آئل ایجنسیوں کے خلاف کارروائی عمل میں لائی گئی کارروائی کی نگرانی ضلعی افسر فرحان کمبوہ نے کی۔ڈپٹی کمشنر/ کنٹرولر سول ڈیفنس آغا ظہیر عباس شیرازی نے کہا ہے کہ غیر قانونی پٹرول پمپس کے خلاف کریک ڈاؤن تسلسل کے ساتھ جاری رکھا جائے گا انہوں نے کہا کہ پیٹرول کا غیر قانونی کام کرنے والے معاشرے کے بدترین دشمن ہیں محکمہ سول ڈیفنس کے افسران ان عناصر کے خلاف بلا دباؤ بھرپور ایکشن کریں اس سلسلہ میں کسی قسم کی کوتاہی برداشت نہیں کی جائے گی۔ ڈسٹرکٹ بار کے صدر راؤ محمدجمیل ایڈووکیٹ، جنرل سیکرٹری منیب احمد خان ڈاہا ایڈووکیٹ نے کہاکہ پٹرول بحران پر حکومت کا ایکشن ٹو پی ڈرامہ ہے چینی مافیا نے دونوں ہاتھوں سے عوام کو لوٹا اوراب پٹرول بحران میں عوام ذلیل وخوار ہورکررہ گئے جبکہ آٹا بحران اورقیمتوں میں مسلسل اضافہ جبکہ جان بچانے والی ادویات غائب حکومتی رٹ کسی بھی شعبے میں نظر نہیں آتی عوام میں مایوسی اوربے چینی بڑھ رہی ہے کورونا وبا کی صورتحال دن بد ن بگڑ رہی ہے بڑھتے ہوئے کیسز اور اموات انتہائی تشویش ناک ہے حکومت کی ذمہ داری ہے کہ وہ درپیش مسائل کے حل کے لیے جامع پالیسی اور عملی اقدام اٹھائے صبح وشام بدلتا ہوا موقف اورپالیسی سے مسائل جنم لے رہے ہیں عوام سے سنجیدگی کا مطالبہ کرنے والے حکمران ایشوز پر خودسنجیدہ نہیں۔انہوں نے کہاکہ قومی لائحہ عمل طے کرکے صورتحال کو سنبھالا جائے۔

حکم

مزید :

ملتان صفحہ آخر -