آن لائن کلاسز، غریب دیہاڑی دار والدین کیلئے نئی مصیبت، بچوں کی پڑھائی بری طرح متاثر

        آن لائن کلاسز، غریب دیہاڑی دار والدین کیلئے نئی مصیبت، بچوں کی پڑھائی ...

  

کوٹ ادو(تحصیل رپورٹر) کورونا وائرس کے باعث ملک بھر میں تعلیمی اداروں کی بندش اور،تعلیمی اداروں کی آن لائن کلاسز سے غریب والدین شدید مشکلات کا شکار ہو گئے ہیں،ہر بچے کیلئے انٹر نیٹ کنکشن، کمپیوٹر،سمارٹ فون،لیپ ٹاپ نے دیہاڑی دار غریب والدین کو چکراکررکھ دیاہے، بجلی کی طویل لوڈشیڈنگ اور انٹرنیٹ کنکشن میں تعطل سے پڑھائی میں بھی مشکلات، کمپیوٹرویگر مطلوبہ آلات غریب والدین (بقیہ نمبر14صفحہ6پر)

کیلئے مسئلہ بن گئے، ضلع مظفرگڑھ کے 60فیصد طلباء طالبات آن لائن کلاسوں سے محروم ہیں تفصیل کے مطابق کورونا وائرس کے باعث ملک بھر میں تعلیمی اداروں کی بندش کے بعدآن لائن کلاسز غریب دیہاڑی دارلاک ڈاؤن کے مارے والدین کیلئے اضافی بوجھ بن گیا ہے،ضلع مظفرگڑھ کے پسماندہ علاقہ میں غریب مزدور دیہاڑی دار طبقہ کیلئے بچوں کی تعلیم کوجاری رکھنا ایک خواب بن گیا ہے،ہر بچے کیلئے انٹر نیٹ کنکشن، کمپیوٹر،سمارٹ فون،لیپ ٹاپ نے دیہاڑی دار غریب والدین کو چکراکررکھ دیاہے،آن لائن کلاسز کے لیے انٹر نیٹ کنکشن، ہر بچے کیلئے الگ کمپیوٹر، ہیڈ فون اور دیگر مطلوبہ آلات غریب والدین کیلئے مسئلہ بن گئے ہیں جس پر ضلع مظفرگڑھ کے 60فیصد طلباء طالبات آن لائن کلاسوں سے محروم ہو گئے ہیں،دوسری طرف بجلی کی طویل لوڈشیڈنگ اور کبھی انٹرنیٹ کنکشن میں تعطل سے پڑھائی اور مشکل ہوگئی،اس حوالے سے طلباء وطالبات کا کہنا تھا کہ آن لائن کلاسوں سے ان کے والدین کی جیب پر اضافی بوجھ پڑ گیا،آن لائن کلاسز کے لیے ہر کسی کے پاس وسائل موجود نہیں، کسی کو سمارٹ فون، کسی کو لیپ ٹاپ، تو کسی کو انٹرنیٹ کا مسئلہ ہے،جبکہ بہت سے طلبہ انٹرنیٹ پیکجز افورڈ نہیں کرسکتے،طلبہ طالبات نے کہا کہ حکومت ہر طالب علم کیلئے سمارٹ فون، فری انٹرنیٹ کا بندو بست کرے یا آن لائن کلاسز کا فیصلہ واپس لے،انہوں نے وزیر اعظم پاکستان عمران خان،صوبائی وزیر تعلیم مراد راس سمیت سیکرٹری تعلیم ودیگر اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا کہ آن لائن کلاسز کیلئے پسماندہ علاقوں کے طلباء کیلئے خصوصی انٹر نیٹ پیکج فراہم کیا جائے اور لیپ ٹاپ موبائل فون بھی دیے جائیں تاکہ وہ اپنی تعلیم جاری رکھ سکیں۔

آن لائن

مزید :

ملتان صفحہ آخر -