کراچی پولیس اسمارٹ لاک ڈاؤن پر موثر عملدرآمد کرانے میں ناکام 

کراچی پولیس اسمارٹ لاک ڈاؤن پر موثر عملدرآمد کرانے میں ناکام 

  

کراچی(رپورٹ/ندیم آرائیں) کراچی کے مخصوص علاقوں میں نافذ کیے گئے اسمارٹ لاک ڈاؤن پر پولیس کی ناقص حکمت عملی کے باعث موثر عملدرآمد نہیں ہوسکا ہے۔مختلف علاقوں میں پولیس اہلکار قناتیں لگاکر واپس چلے گئے،جس کی وجہ سے شہریوں کی آمد و رفت کا سلسلہ آزادانہ طور پر جاری رہا۔نفری تعینات نہ ہونے کے باعث لاک ڈاؤن کے مثبت نتائج ملنا دشوار ہوگئے ہیں۔تفصیلات کے مطابق ملک بھر میں کورونا وائرس کے بڑھتے ہوئے کیسز کے باعث کراچی سمیت سندھ کے مختلف شہروں کے مخصوص علاقوں میں حکومت کی جانب سے اسماٹ لاک ڈاؤن کا نفاذ کیا گیا ہے۔حکومتی نوٹی فکیشن کے مطابق ان علاقوں میں شہریوں کی آمد ورفت،ٹرانسپورٹ اور کاروبار کی بندش ہوگی۔حکومتی احکامات پر عملدرآمد کرانے کے لیے ضلعی انتظامیہ اور پولیس کو ذمہ داریاں تفویض کی گئی تھیں لیکن پولیس کے غیر سنجیدہ رویے کے باعث لاک ڈاؤن پر موثر عملدرآمد نظر نہیں آرہا ہے۔لاک ڈاؤن کی زد میں آنے والے شہر کے علاقوں میں پولیس اہلکاروں نے مخصوص گلیوں کو قناتیں لگاکر بند کردیا اور وہاں سے روانہ ہوگئے،جس کے بعد شہریوں نے ان قناتوں کو ہٹا کر اپنی آمد و رفت کا سلسلہ جاری رکھا جبکہ گلی محلوں میں موجود دکانیں بھی کھلی رہیں۔ذرائع کا کہنا ہے کہ کراچی پولیس کو نفری کی کمی کا سامنا ہے لیکن اہلکاروں کو بالکل ہی تعینات نہ کرنا کئی سوالات کو جنم دے رہا ہے۔ادھر شہری حلقوں کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس کی صورت حال دن بدن تشویشناک صورت حال اختیار کرتی جارہی ہے۔حکومت نے ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسرز کی سفارش پر ایسے علاقے جہاں کورونا کیسز زیادہ ہیں وہاں مکمل لاک ڈاؤن کا فیصلہ کیا لیکن اگر حکومتی احکامات عملدرآمد نہ ہوسکا تو اس کے فوائد ملنا بہت مشکل ہیں۔انہوں نے وزیراعلیٰ سندھ،آئی جی سندھ اور کراچی پولیس چیف سے مطالبہ کیا کہ پولیس کی نفری تعینات کرکے لاک ڈاؤن پر موثر عملدرآمد کرایا جائے۔

مزید :

صفحہ آخر -